نتیش کمار نے بہار کے وزیر اعلیٰ کے عہدے کا حلف اٹھا لیا

تصویر کے کاپی رائٹ AP

بھارت کی مشرقی ریاست بہار میں حکمراں جماعت بی جے پی کو ایک سخت مقابلے کے بعد ریاستی انتخابات میں شکست دینے والے نتیش کمار نے وزیر اعلیٰ کے عہدے کا حلف اٹھا لیا ہے۔

نتیش کمار نے ریاستی انتخابات لالو پرساد یادو اور کانگریس پارٹی کے ساتھ مل کر ایک ’بڑے اتحاد‘ میں لڑا۔

بہار میں شکست: ’ایک سال سے پارٹی کو کمزور بنا دیا گیا ہے‘

مودی کی اصلاحات کا کیا ہوگا؟

بہار میں بی جے پی مخالف اتحاد کی واضح اکثریت

لالو پرساد یادو کے بیٹے تیجاسوی یادو نے بطور نائب وزیر اعلیٰ کے حلف اٹھایا۔

حلف برداری کی تقریب میں پورے بھارت سے علاقائی جماعتوں نے شرکت کی جن میں کئی کا مقابلہ ریاستی انتخابات میں بی جے پی سے ہوگا۔

اس تقریب میں شریک ہونے والوں میں مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بینرجی، دہلی کے ارویند کیجریوال، کرناٹکا کے وزیر اعلیٰ سدارامیا شامل ہیں۔

اس ’بڑے اتحاد‘ کی جیت سے حزب مخالف کو بڑا جھٹکا پہنچا ہے۔ بھارت کی سب سے بڑی آبادی والی ریاست اتر پردیش کے وزیر اعلیٰ پہلے ہی کہہ چکے ہیں کہ وہ 2017 میں ہونے والے علاقائی انتخابات کے لیے اسی قسم کا اتحاد بنانے کا سوچ رہے ہیں۔

وزیر اعظم نریندر مودی نے بہار میں بی جے پی کی انتخابی مہم میں حصہ لیا اور انھوں نے اکثر نتیش کمار اور ان کے اتحادی ساتھی لالو پرساد یادو کو تنقید کا نشانہ بنایا۔

بہار کے انتخابات نریندر مودی کی شہرت کا امتحان سمجھے جا رہے تھے اور ان کی اقتصادی اصلاحاتی پالیسی کے لیے بھی اہم تھے۔

تاہم گرینڈ اتحاد نے کل 243 نشستوں میں سے 178 نشستوں پر کامیابی حاصل کی جبکہ بی جے پی کو صرف 58 نشستیں حاصل ہوئیں۔

اسی بارے میں