گاندھی خاندان کی کرپشن الزامات پر عدالت میں پیشی

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کانگریس نے نیشنل ہیرلڈ اخبار معاملے میں الزامات کی تردید کی ہے

بھارت میں حزب اختلاف کی سرکردہ رہنما سونیا گاندھی اور ان کے بیٹے راہل گاندھی بدعنوانی کے ایک مقدمے کے تحت عدالت میں پیش ہوئے جہاں عدالت نے ان کی غیر مشروط ضمانت منظور کر لی۔

مدعی اور بی جے پی کےممبر پارلیمنٹ سبرامنیم سوامی نے ضمانت کی مخالفت کی اور عدالت میں تمام ملزمان کے بیرون ملک سفر پر پابندی لگانے کی بات کہی۔

انڈیا گیٹ کے سامنے دہلی کی ضلعی عدالت پٹیالہ ہاؤس کی مجسٹریٹ کی جانب سے نہ صرف راہل گاندھی اور سونیا گاندھی کو ضمانت دی گئی بلکہ اس مقدمے میں شامل تمام چھ افراد کو ضمانت دے دی گئی ہے۔

کانگریس کے رہنماؤں پر ایک اخبار نیشنل ہیرلڈ کی املاک کو غیر قانونی طور پر حاصل کرنے کے الزامات ہیں۔ جبکہ انھوں نے کسی قسم کے غیر قانونی عمل سے انکار کیا ہے۔

کانگریس کے رہنماؤں کا دفاع کرتے ہوئے کانگریس رہنما اور وکیل کپل سبل نے بتایا: ’جج نے تمام افراد کو غیر مشروط ضمانت دے دی ہے اور 20 فروری کو دوپہر دو بجے اگلی سماعت ہوگی۔‘

انھوں نے بتایا کہ کانگریس رہنماؤں نے عدالت سے آئندہ سماعت میں نہ حاضر ہونے کوئی اپیل نہیں کی ہے۔

کانگریس رہنما اور وکیل ابھیشیک سنگھوی نے کہا کہ ’سبرامنیم سوامی نے ملزمان کے بیرون ملک سفر پر پابندی لگانے کا مطالبہ کیا تھا جسے جج نے مسترد کر دیا۔‘

تمام افراد کو 50-50 ہزار روپے کے مچلکوں کے عوض ضمانت پر رہائی دی گئی ہے۔

ضمانت کے بعد کانگریس ہیڈکوارٹر پہنچ کر سونیا گاندھی نے مرکزی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیتے ہوئے کہا، ’مرکزی حکومت اپنے مخالفین کو نشانہ بنا رہی ہے، لیکن ہم ڈرنے والے نہیں ہیں اور ہماری جنگ جاری رہے گی۔‘

وہیں راہل گاندھی نے کہا، ’مودی جی جھوٹے الزام لگواتے ہیں اور سوچتے ہیں کہ اپوزیشن جھک جائے گی۔ میں اور کانگریس پارٹی ایک انچ پیچھے نہیں ہٹیں گے۔‘

Image caption عدالت کے باہر سینکڑوں کی تعداد میں کانگریس کارکنوں کے جمع ہونے کا امکان ظاہر کیا گيا ہے

حکمراں جماعت بی جے پی کے رہنما سبرامنیم سوامی اس معاملے میں مدعی ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ سونیا گاندھی اور راہل گاندھی نے اخبار نیشنل ہیرلڈ کی املاک کو ذاتی املاک بنالیا۔

نیشنل ہیرلڈ کی اشاعت سنہ 2008 میں بند کر دی گئی تھی اور کانگریس نے سنہ 2010 میں اسے اپنے قبضے میں لے لیا تھا۔

اس اخبار کی اشاعت بھارت کے پہلے وزیر اعظم جواہر لعل نہرو نے سنہ 1938 میں کی تھی جبکہ کانگریس پارٹی نے اس اخبار کو پھر سے جاری کرنے کی بات کہی تھی۔

لیکن مسٹر سوامی نے الزام عائد کیا ہے کہ ان رہنماؤں نے اخبار کی ملکیت حاصل کرنے کے لیے پارٹی فنڈ کا بے جا استعمال کیا ہے۔

اس مقدمے کی وجہ سے پارلیمان کا حالیہ سیشن بدنظمی کا شکار رہا اور کانگریس کے اراکین پارلیمان نے حمکراں جماعت بی جے پی پر ’سیاسی انتقام‘ کا الزام لگایا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ PTI
Image caption بی جے پی کے رہنما سبرامنیم سوامی نے راہل گاندھی اور سونیا گاندھی پر الزامات عائد کیے ہیں

اسی بارے میں