پاکستانی خاتون کو 20 سال بعد بھارتی شہریت مل گئی

تصویر کے کاپی رائٹ Atul Chandra
Image caption 30 دسمبر سنہ 2015 کو رام پور کے ضلع مجسٹریٹ نے افشين کو بھارتی شہری ہونے کا سرٹیفکیٹ جاری کیا تھا

سنہ 1994 میں پاکستان سے شادی کر کے بھارت کے شہر رام پور آنے والی افشين اور ان کے شوہر مرتضی خان کو 20 سال بعد بھارت کی شہریت ملی ہے۔

مرتضی خان کہتے ہیں: ’کراچی میں ان کے سسرال کے لوگ بھی بہت خوش ہیں کیونکہ افشين سات سال بعد پاکستان جا سکیں گی۔‘

عدنان سمیع خان کو بھارتی شہریت مل گئی

30 دسمبر سنہ 2015 کو رام پور کے ضلع مجسٹریٹ نے افشين کو بھارتی شہری ہونے کا سرٹیفکیٹ جاری کیا تھا۔

بھارتی شہریت ملنے کے عمل میں افشين کو سنہ 2007 میں اپنا پاکستانی پاسپورٹ واپس کرنا پڑا تھا جس کے بعد ان کا پاکستان جانا بند ہو گیا تھا۔

سنہ 2008 میں پاکستانی سفارت خانے نے انھیں ان کی پاکستانی شہریت ختم ہونے کی سند دی جس کے بعد بھارتی شہریت حاصل کرنے کے کام میں قدرے سہولت ہو گئی۔

مرتضی خان نے سنہ 2000 کے آخر میں افشين کے لیے بھارتی شہریت کی درخواست دی تھی۔

ان کے مطابق: ’شہریت ملنے میں طویل وقت لگتا ہے۔ اس دوران طویل مدتی ویزے کی سہولت کے سہارے کام چلانا پڑتا تھا۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption پاکستان اور بھارت کے شہریوں میں ایک عرصے سے شادیاں ہوتی رہی ہیں اور ویزے میں نرمی کی باتیں کی جاتی رہی ہیں

رام پور میں مقامی انٹیلیجنس یونٹ کے پولیس افسر عرفان علی کے مطابق ابھی وہاں 36 پاکستانی خواتین ہیں، جن کی شہریت کی درخواست پر فیصلہ ہونا باقی ہے۔ ان میں ایک ہندو بھی ہے۔

عرفان علی نے بی بی سی کو بتایا: ’ان کی شہریت کے لیے آن لائن کارروائی کی جا رہی ہے۔‘

اس میں سے کچھ معاملات سنہ 1979 سے التوا میں ہیں۔

بھارت کے قدیم صنعتی شہر کانپور میں سنہ 1988 سے قیام پزیر کراچی کی شکیلہ بانو کو بھی امید ہے کہ انھیں بھی جلد ہی بھارتی شہریت مل جائے گي۔

شکیلہ کی سنہ 1989 میں کانپور کے منا بابو سے شادی ہوئي تھی اور اس کے بعد شکیلہ بھی طویل مدتی ویزے کی بدولت ہندوستان میں رہ رہی ہیں۔

شکیلہ کے شوہر منا نے بتایا ’شکیلہ نے جولائی میں شہریت تبدیل کرنے کی درخواست دی تھی۔‘

’شہریت کے لیے داخل کیے جانے والے کاغذات میں چند غلطیاں ہو گئیں تھیں جس کی وجہ سے اتنی دیر ہو گئی اور اب فیس بھی 10,000 روپے ہو چکی ہے۔‘

شہریت ملنے کی امید پر منا نے بتایا کہ انھیں اخبارات سے پتہ چلا کہ شکیلہ کے سارے کاغذات درست پائے گئے ہیں اور اب جلد ہی انھیں شہریت ملنی جانی چاہیے۔

اسی بارے میں