خواتین سے بدسلوکی کی ویڈیو وائرل، تحقیقات شروع

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption ایک منٹ طویل ویڈیو میں پولیس کی وردی پہنے شخص کا چہرہ دکھائی نہیں دے رہا ہے

بھارت کی مغربی ریاست گجرات کے سب سے بڑے شہر احمد آباد میں ایک پولیس اہلکار کی خواتین سے مبینہ چھیڑ چھاڑ کی ویڈیو وائرل ہونے کے بعد پولیس حکام نے معاملے کی تحقیقات شروع کر دی ہیں۔

شہر میں حال ہی میں جھیل کنارے منعقدہ میلے کے دوران بنائی گئی اس ویڈیو میں پولیس کی وردی میں ملبوس ایک شخص خواتین کو چھوتے ہوئے اور چھیڑ چھاڑ کرتے ہوئے دکھائی دے رہا ہے۔

اس ایک منٹ طویل ویڈیو میں اس شخص کا چہرہ دکھائی نہیں دے رہا ہے، کیونکہ ویڈیو اس کے عقب سے بنائی گئی ہے۔

ویڈیو میں واضح طور پر دکھائی دے رہا ہے کہ یہ شخص جان بوجھ کر اپنے آگے چلنے والی خواتین کو غلط طریقے سے چھو رہا ہے۔

تاحال یہ ویڈیو بنانے والی کی شناخت بھی سامنے نہیں آئی ہے۔

احمد آباد کے جوائنٹ پولیس کمشنر منوج ششدھرن نے بی بی سی ہندی کے انکر جین کو بتایا، ’اس ویڈیو کے بارے میں معلومات حاصل کرنے کے بعد ہم نے ابتدائی تفتیش شروع کر دی ہے تاہم ہم تاحال کسی نتیجے پر نہیں پہنچ سکے ہیں، اس شخص کی شناخت نہیں ہو سکی ہے۔‘

احمد آباد انتظامیہ ہر سال ثقافت کو فروغ دینے کے لیے جھیل کنارے جشن منعقد کرتی ہے جو ایک ہفتے تک چلتا ہے۔

اس میلے میں ہزاروں لوگ شرکت کرتے ہیں اور اس موقع پر سخت حفاظتی انتظامات کیے جاتے ہیں۔

اسی بارے میں