’ایران کی ڈرون سے امریکی بحری جہاز کی نگرانی‘

تصویر کے کاپی رائٹ IRINN VIA AP
Image caption سرکاری نیوز چینل نے یہ نہیں بتایا کہ جاسوس طیارے نے کس دن یہ تصاویر کھینچی تھیں

ایران کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق ایک ایرانی ڈرون طیارے نے بحری مشقوں کے دوران امریکی طیارہ بردار بحری جہاز کے اوپر پرواز کرتے ہوئے اس کی بالکل واضح تصاویر کھینچی ہیں۔

سرکاری ٹی وی پر خلیج میں ایک نامعلوم امریکی جنگی بحری جہاز کی تصاویر دکھائی گئی ہیں۔

بحری عملے کی رہائی پر امریکہ ایران کا شکرگزار

ٹی وی کے مطابق’ایرانی بحریہ کے کمانڈر نے اس آپریشن میں امریکی بحری جنگی جہاز کے بہت قریب جا کر غیر ملکی فوج کے جنگی یونٹس کی درست اور معیاری تصاویر حاصل کرنے کے آپریشن کی تعریف کی ہے۔

ایرانی بحریہ کے ایڈمرل حبیب اللہ شیاری نے سکاری ٹی وی کو بتایا ہے کہ’ یہ ہمارے ڈرون آپریٹرز کی بہادری، سائنسی قابلیت اور تجربے کی مثال ہے۔‘

امریکہ کا کہنا ہے کہ حال ہی میں اس کے بحری جہاز کے اوپر سے ایرانی ڈرون گزرا تھا تاہم یہ نہیں بتایا گیا کہ آیا اسی ڈرون کی حاصل کردہ تصاویر نشر کی گئی ہیں۔

برطانوی خبر رساں ایجنسی روئٹرز نے امریکی بحریہ کی خاتون ترجمان کے حوالے سے بتایا ہے کہ’ اس سے امریکی بحری جہاز یو ایس ایس ہیری ایس ٹرومین کو کسی قسم کا خطرہ لاحق نہیں تھا لیکن یہ غیر پیشہ وارانہ اور خلاف معمول حرکت تھی۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ IRIB
Image caption امریکہ کا کہنا ہے کہ حال ہی میں اس کے بحری جہاز کے اوپر سے ایرانی ڈرون گزرا تھا

ترجمان کے مطابق یہ واقعہ 12 جنوری کو پیش آیا تھا اور اسی دن ایران نے مختصر مدت کے لیے امریکی بحری کے دس اہلکاروں کو غلطی سے ایران کی سمندری حدود میں داخل ہونے پر حراست میں لیا تھا۔

ایران کے سرکاری نیوز چینل نے یہ نہیں بتایا کہ جاسوس طیارے نے کس دن یہ تصاویر کھینچی تھیں تاہم یہ بتایا کہ بحری مشقوں کے تیسرے دن یہ آپریشن کیا گیا۔

امریکی خبر رساں ایجنسی اے پی کے مطابق یہ واقعہ جمعے کو پیش آ سکتا ہے کیونکہ ایران نے رواں ہفتے کے آغاز پر بحری مشقوں کا آغاز کیا تھا۔

سرکاری ٹی وی کے مطابق ایرانی بحریہ کی ایک ہلکی آبدوز نے بھی جاسوسی کے مشن میں حصہ لیا تھا۔

عالمی طاقتوں سے جوہری معاہدہ طے پانے کے بعد ایران سے مغربی پابندیاں رواں ماہ ختم ہو گئی ہیں اور اس کے مغرب سے تعلقات میں بہتری آنا شروع ہوئی ہے۔ تاہم امریکہ نے ایران پر پابندیاں اٹھنے کے چند دن بعد ہی اس پر بیلسٹک میزائل کے تجربے کی وجہ سے نئی پابندیاں عائد کر دی تھیں۔

اسی بارے میں