’اپنی سیلفی سٹک گھر چھوڑ کر آئیں‘

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption گذشتہ سال چین کی سالانہ کانفرنس میں لوگوں کو اس طرح سیلفی لیتے ہوئے دیکھا گيا تھا

چین کے دارالحکومت بیجنگ میں ہونے والے اہم سالانہ سیاسی کانفرنس میں شرکت کرنے والے مندوبین سے کہا گیا ہے وہ سیلفی سٹک کانفرنس ہال میں نہ لائیں۔

خیال رہے کہ نیشنل پیپلز کانگریس (این سی پی) اور چائنیز پیپلس پولیٹیکل کنسلٹیٹیو کانفرنس (سی پی پی سی سی) کی گذشتہ سال کی کانفرنس میں سیاست دانوں، صحافیوں اور تاجروں کو سیلفی سٹکس کا استعمال کرتے ہوئے دیکھا گیا تھا۔

لیکن ساؤتھ چائنا مارننگ پوسٹ اخبار کے مطابق رواں سال منتظمین نے ’گریٹ ہال آف دا پیپل‘ میں اس کے استعمال پر پابندی لگا دی ہے اور کہا گیا ہے کہ مندوبین اپنے کام پر دھیان دیں نہ کہ اپنی تصویریں خود ہی لیتے پھریں۔

اس پابندی کا اطلاق ان صحافیوں پر بھی ہوگا جو ان کانفرنسوں کی رپورٹنگ کرتے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption سیلفی کے چلن کے بعد سے سیلفی سٹک کی اہمیت میں اضافہ ہوا ہے

سی پی پی سی سی کے ترجمان ژانگ جنگیان نے کہا کہ ’مندوبین کا سب سے بڑا کام ان کی اپنے فرائض کی انجام دہی ہے۔‘ اس کے ساتھ ہی انھوں نے کہا کہ جو لوگ سیلفی سٹک گھماتے پھرتے ہیں اس سے خراب تاثرات پیدا ہوتے ہیں اور اس کے علاوہ اس سے دھیان بھی منتشر ہوتا ہے۔

سرکاری اخبار پیپلز ڈیلی میں ایک مبصر نے لکھا کہ یہ پابندی بعض لوگوں کو ’بلا جواز نظر آئیں گي لیکن چین کے سائز کو دیکھتے ہوئے سخت ضوابط کی ضروت ہے۔

خیال رہے کہ اس سالانہ کانفرنس میں جسے ’ٹو سیشنز‘ کے نام سے پکارا جاتا ہے کمیونسٹ پارٹی کے ہزاروں اہلکار کے علاوہ مقامی حکومت کے نمائندے اور تاجر حضرات یکجا ہوتے ہیں۔

اسی بارے میں