پٹھان کوٹ حملے کی تحقیقات سے منسلک افسر قتل

تصویر کے کاپی رائٹ NIA

بھارتی ریاست اتر پردیش کے ضلع بجنور میں قومی تفتیشی ایجنسی (این آئی اے) کے ایک افسر تنزیل احمد کو اتوار کی صبح گولی مار کر ہلاک کر دیا گیا۔

ریاست اتر پردیش کے ایڈیشنل ڈائریکٹر جنرل (اے ڈی جی) دلجیت سنگھ چودھری نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ ’رات دو بجے تنزیل احمد اپنے اہل خانہ کے ساتھ ایک شادی کی تقریب سے واپس آ رہے تھے تبھی کچھ نامعلوم افراد نے ان پر حملہ کیا۔‘

انہوں نے بتایا کہ تنزيل احمد کی جائے وقوعہ پر ہی موت ہو گئی تھی جبکہ ان کی بیوی شدید زخمی ہوئیں جن کو دہلی منتقل کیا گیا ہے۔

اے ڈی جی چودھری کے مطابق تنزیل احمد پہلے بارڈر سکیورٹی فورسز (بی ایس ایف) میں تھے اور اب این آئی اے کی ٹیم کا حصہ تھے۔

حکام کے مطابق تنزیل احمد پٹھان کوٹ حملے کی تحقیقات سے بھی وابستہ تھے لیکن ابھی یہ واضح نہیں ہے کہ ان پر حملے کی کیا وجہ ہے۔

پولیس کے مطابق این آئی اے اور یو پی اے ٹی ایس کی ٹیمیں جائے حادثہ پر پہنچ گئی ہیں اور تحقیقات جاری ہیں۔

حکام کے مطابق ابھی تک یہ معلوم نہیں ہو سکا ہے کہ حملے کی کیا وجہ تھی اور حملہ آور کون تھے۔

اسی بارے میں