آئی پی ایل کے افتتاحی میچ کی عدالت نے اجازت دے دی

تصویر کے کاپی رائٹ PTI
Image caption آئی پی ایل میں بالی وڈ کے ستارے زیادہ دلچسپی لیتے ہیں

انڈیا میں مہارشٹرا کی ریاست میں بمبئی کی ہائی کورٹ نے انڈین پریمیئر لیگ کے ہفتے کو ہونے والے افتتاحی میچ کو ملتوی کرنے کی درخواست کو رد کر دیا ہے۔

بمبئی ہائی کورٹ میں مفاد عامہ کے تحت ایک درخواست دائر کی گئی تھی جس میں عدالت سے استدعا کی گئی تھی کہ ریاست مہاراشٹر میں پانی کی شدید قلت اور خشک سالی جیسی صورت حال کے پیش نظر آئی پی ایل کے تحت کرکٹ کے میچ ریاست کے تینوں شہروں کے بجائے کہیں اور منتقل کیے جائیں۔

درخواست میں کہا گیا تھا کہ کرکٹ کے میدانوں اور پچوں کو تیار کرنے کے لیے بہت زیادہ مقدار میں پانی درکار ہوتا ہے اور ریاست میں پانی کی قلت میں میدانوں اور کرکٹ کی پیچوں کے لیے پانی کے استعمال کی اجازت نہیں دی جانی چاہیے۔

عدالت نے ریاستی حکومت پر شدید تنقید کی اور اس صورت حال سے نمٹنے کے بارے میں حکو مت کی سنجیدگی پر بھی سوالات اٹھائے۔ عدالت میں کہا گیا کہ’ ریاستی حکومت کو ایسی صورت حال کا سامنا ہے جہاں جانور اور مویشیوں کے علاوہ انسان بھی مر رہے ہیں اور آپ کو کرکٹ کے میدانوں اور پیچوں کی فکر کھائے جا رہی ہے۔‘

عدالت نے کہا کہ وہ پہلے میچ کو تو منسوخ یا موخر نہیں کر رہے کیونکہ وہ دیکھنا چاہتے ہیں کہ کیا میدانوں کو جو پانی ٹینکروں کے ذریعے فراہم کیا جاتا ہے آیا وہ پینے کے قابل ہے کہ نہیں۔

قبل ازیں عدالت نے انڈین پریمیئر لیگ کے میچوں کو پانی کی بچت کرنے کےلیے خشک سالی سے متاثرہ ریاست مہاراشٹر سے کہیں اور منتقل کرنے کی ہدایت کی ہے۔

آئی پی ایل مقابلوں کے دوران ٹی ٹوئنٹی کرکٹ کے 20 میچ مہاراشٹر کی ریاست کے شہروں ممبئی، پونے اور ناگپور میں اپریل اور مئی کے مہنیوں میں ہونے ہیں۔

آئی پی ایل کرکٹ کی دنیا میں کھیلی جانے والی لیگ میں سب سے امیر ترین لیگ ہے۔

ہر سال موسم بہار میں انڈیا اور کرکٹ کھیلنے والے دیگر ملکوں کے بہتریں کھلاڑی آئی پی ایل کے میچوں میں شرکت کرتے ہیں۔

آئی پی ایل میں آٹھ ٹیمیں حصہ لیتی ہیں اور اس سلسلے کا پہلا میچ ہفتے کو مہاراشٹر کے ریاستی دارالحکومت ممبئی میں ہونے والا ہے۔

ممبئی ہائی کورٹ میں ججوں کا کہنا ہے کہ ٹورنامنٹ کے دوران پیچیں تیار کرنے کے لیے بہت زیادہ پانی درکار ہوتا ہے۔

مجرمانہ زیاں

ایک رپورٹ کے مطابق ان تینوں شہروں میں میدانوں اور پیچیں تیار کرنے کے لیے ساٹھ لاکھ لیٹر پانی درکار ہوتا ہے۔

بھارتی ٹی وی چینل این ڈی ٹی وی نے ایک جج کے حوالے سے کہا کہ ’آپ کس طرح اتنا پانی ضائع کر سکتے ہی؟ کیا آئی پی ایل عوام سے زیادہ اہم ہے؟ آپ کیسے اتنے بے حس ہو سکتے ہیں؟

انھوں نے کہا کہ یہ پانی کا مجرمانہ زیاں ہے۔ آپ مہراشٹر میں صورت حال سے آگاہ ہیں۔

عدالت مہاراشٹر میں پانی کی شدید قلت یا خشک سالی کے بارے میں دائر ایک درخواست کی سماعت کر رہی ہے۔

Image caption مہاراشٹر میں کسانوں کی خودکشیاں تشویشناک حد تک زیادہ ہے

آئی پی ایل کے چیئرمین اور رکن پارلیمان راجیو شکلا نے منگل کو ایک بیان میں کہا تھا کہ آئی پی ایل کے میچ طے شدہ شیڈول کے مطابق ہوں گے۔

انھوں نے مزید کہا کہ جہاں تک مہاراشٹر میں پانی کی کمی اور کسانوں کو درپیش صورت حال کا تعلق ہے وہ کسانوں کے ساتھ ہیں۔ انھوں نے کہا کہ وہ کسانوں کی ہر ممکن مدد کرنے کے لیے تیار ہیں۔

مہاراشٹر کی حکومت کو اپنے تعاون کا یقین دلاتے ہوئے انھوں نے کہا کہ اگر مہاراشٹر کی حکومت اس سلسلے میں کوئی تجویز لے کر آتی ہے تو وہ اس کی مدد کرنے کے بارے میں سوچیں گے۔

انھوں نے کہا کہ رکنِ پارلمان کی حیثیت سے ملنے والے فنڈ سے وہ مہاراشٹر میں خشک سالی سے متاثرہ گاؤں پر خرچ کرنے کے لیے تیار ہیں۔

گذشتہ مسلسل دو برس سے مون سون کے موسم میں کم بارشوں سے مہاراشٹر کے بہت سے دیہاتوں میں پانی کی شدید قلت اور خشک سالی سے فصلیں متاثرہ ہو رہی ہیں۔

ایک وزیر کی طرف سے پارلیمان کو فراہم کیے جانے والے اعداد و شمار کے مطابق گذشتہ برس تین ہزار دو سو اٹھائیس کسانوں نے خود کشیاں کی تھیں جو چودہ برس میں سب سے زیادہ ہیں۔

اسی بارے میں