مغربی بنگال: اسمبلی انتخابات کے لیے دوسرے مرحلے کی پولنگ

Image caption صبح ہی سے پولنگ مراکز پر ووٹ ڈالنے کے لیے لوگوں کی لمبی قطاریں نظر آ رہی ہیں۔ اسمبلی انتخابات کے حوالے سے لوگوں میں کافی جوش دیکھا گیا ہے

انڈین ریاست مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات کے لیے اتوار کو دوسرے مرحلے میں 56 سیٹوں کے لیے ووٹ ڈالے جارہے ہیں جس کے لیے سکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے ہیں۔

مقامی وقت کے مطابق صبح سات بجے ووٹنگ شروع ہوئی جو شام پانچ بجے تک جاری رہے گی۔

صبح ہی سے پولنگ مراکز پر ووٹ ڈالنے کے لیے لوگوں کی لمبی قطاریں نظر آ رہی ہیں۔ اسمبلی انتخابات کے حوالے سے لوگوں میں کافی جوش دیکھا گیا ہے۔

انتخابات کے لیے سکیورٹی کے سخت انظامات کیے گئے ہیں۔ اطلاعات کے مطابق بعض جگہوں پر سیاسی جماعتوں کے کارکنان میں کچھ جھڑپیں ہوئی ہیں جس میں بعض افراد زخمی ہوئے ہیں لیکن مجموعی طور پر پولنگ پر امن رہی ہے۔

بول پور میں شانتی نکیتن کے پولنگ بوتھ پر ووٹ دے کر واپس آنے والے ایک خاندان نے وہاں موجود بی بی سی کے نامہ نگار سلمان راوی کو بتایا کہ صبح صبح ووٹ دینے میں انہیں بہت اچھا لگتا ہے۔

ووٹ دے کر واپس آرہی ایک خاتون ووٹر نے بی بی سی کو بتایا کہ وہ چاہتی ہیں کہ شانت نكیتن میں امن رہے۔

ان کا کہنا تھا ’یہاں ترقی کی ضرورت ہے۔ غریبوں کے لیے کھانا پانی کی ضرورت ہے۔ بے روزگاری ایک بڑا مسئلہ ہے۔ اگر حکومت ان باتوں پر توجہ دے تو عوام خوش رہے گی۔‘

ریاست مغربی بنگال میں جن علاقوں میں اتوار کو ووٹ ڈالے جا رہے ہیں اس میں جلپائيگڑي، دارجیلنگ، شمالی اور جنوبی دانا پور کی اسمبلی نشستیں خاص ہیں۔

56 سیٹوں کے لیے ہونے والے ان انتخابات کے لیے مجموعی طور پر 383 امیدوار میدان میں ہیں جن کی قسمت کا فیصلہ آج ہونا ہے۔

اس انتخاب میں حیران کن پہلو یہ ہے کہ 383 امیدواروں میں سے خواتین امیدوار کی تعداد محض 33 ہی ہے جو کہ ایک فیصد سے بھی کم ہے۔

ریاست مغربی بنگال میں اس بار کے اسمبلی انتخابات کو کئی معنوں میں بہت ہی خاص مانا جا رہا ہے۔

بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) پورے دم خم کے ساتھ میدان میں اتری ہے۔ دوسری جانب کانگریس اور سی پی ایم کے اتحاد کے حوالے سے بھی سیاسی ماحول کافی گرم ہے۔

ریاست کی وزیراعلی ممتا بنرجی کی سیاسی جماعت ترنمول کانگریس کا سیدھا مقابلہ بی جے پی اور سی پی ایم کانگریس اتحاد سے ہے۔

مغربی بنگال میں کل 294 سیٹوں کے لیے چھ مراحل میں انتخابات ہونے ہیں۔

انتخابات کے پہلے مرحلے میں 4 اپریل کو 18 سیٹوں کے لیے اور 11 اپریل کو 31 سیٹوں کے لئیے ووٹ ڈالے جا چکے ہیں۔

اسی بارے میں