جھارکھنڈ: جادوگری کے الزام میں مکان نذرِ آتش، دس گرفتار

تصویر کے کاپی رائٹ Ravi prakash
Image caption خیال رہے کہ جھارکھنڈ میں جادوگری اور خواتین کو ڈائن قرار دے کر قتل کرنے کے واقعات ماضی میں بھی پیش آتے رہے ہیں

انڈیا کی مشرقی ریاست جھارکھنڈ میں پولیس کے مطابق جادوگری کے الزام میں ہجوم کی جانب سے ایک خاندان کے گھر کو نذرآتش کرنے پر دس افراد کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔

اتوار کو پیش آنے والے اس واقعے میں خاندان کے سربراہ گوادھن بھگت سمیت تین افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

مقامی افراد نے اس خاندان پر الزام عائد کیا کہ وہ بچوں کی قربانی کے لیے انھیں اغوا کرتا تھا تاہم پولیس کا کہنا ہے اس قسم کے شواہد نہیں ملے۔

ہلاک ہونے والے گوادھن بھگت مبینہ طور پر ایک بچے کا سر قلم کرنے پر جیل میں سزا کاٹ چکے تھے۔

دوسری جانب بھارت کی دارالحکومت نئی دہلی میں ایک اور واقعے میں پولیس نے ایک چھوٹی بچی کو بازیاب کروایا ہے۔ اطلاعات کے مطابق اس کا ایک قریبی رشتے دار اور دو دیگر افراد اس کی قربانی کی تیاری کر رہے تھے۔

خیال رہے کہ جھارکھنڈ میں جادوگری اور خواتین کو ڈائن قرار دے کر قتل کرنے کے واقعات ماضی میں بھی پیش آتے رہے ہیں۔

گذشتہ سال اگست میں جھارکھنڈ میں حکام کے مطابق ایک گاؤں میں مقامی افراد نے ’ڈائن‘ قرار دے کر پانچ خواتین کو قتل کر دیا تھا۔

پولیس حکام کے مطابق ریاست بننے کے بعد سے اب تک اس طرح کے واقعات میں 1200 خواتین کو ہلاک کیا جا چکا ہے۔

اسی بارے میں