میرا گلا گھونٹنے کی کوشش کی گئی: کنہیا کمار

تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption کنہیا کمار چند ماہ قبل جے این میں ہونے والے ایک پروگرام کے نتیجے میں غداری کے الزام میں جیل جانے کے بعد سے شہ سرخیوں میں ہیں

انڈیا کی معروف یونیورسٹی جے این یو میں سٹوڈینٹس یونین صدر کنہیا کمار نے ٹویٹ کے ذریعے الزام لگایا ہے کہ جیٹ ایئر ویز کے طیارے میں ان پر ایک مسافر نے حملہ کیا ہے۔

اتوار کے اپنے متعدد ٹویٹس میں کنہیا کمار نے الزام لگایا کہ طیارے کے اندر ان کا گلا دبانے کی کوشش کی گئی۔

٭ کنہیا کمار کے حیدرآباد یونیورسٹی جانے پر پابندی

٭ بھگت سنگھ اپنے زمانے کے کنہیا کمار تھے؟

انڈیا کی خبررساں ایجنسی پی ٹی آئی نے بتایا ہے کہ پولیس نے اس معاملے میں ایک شخص کو حراست میں لیا ہے۔

مبینہ حملہ کرنے والے نوجوان سے ایئر پورٹ کے سیکورٹی اہلکار پوچھ گچھ کر رہے ہیں۔

اس سے قبل کنہیا پر کئی بار حملے ہو چکے ہیں جن میں عدالت میں ہونے والا حملہ بھی شامل ہے۔ کنہیا کمار چند ماہ قبل جے این میں ہونے والے ایک پروگرام کے نتیجے میں غداری کے الزام میں جیل جانے کے بعد سے شہ سرخیوں میں ہیں۔

کنہیا ممبئی سے جیٹ ایئر ویز کی فلائٹ سے پونے جانے والے تھے۔

کنہیا نے لکھا: ’ایک بار پھر، اس بار طیارے کے اندر، ایک شخص نے میرا گلا گھونٹنے کی کوشش کی۔‘

Image caption دارالحکومت دہلی کی ایک عدالت میں پیشی کے دوران ان کو زدوکوب کیا گیا تھا

جیٹ ایئر ویز کو ٹوئٹر پر ٹیگ کرتے ہوئے کنہیا نے لکھا: ’جیٹ ایئر ویز نے ہمیں اور جس شخص نے حملہ کیا تھا اسے بھی سیکورٹی وجوہات سے ہوائی جہاز سے اترنے کے لیے کہا۔‘

کنہیا نے الزام لگایا: ’اس واقعے کے بعد جیٹ ایئر ویز کے عملے نے اس شخص کے خلاف کوئی بھی کارروائی کرنے سے انکار کر دیا جس نے مجھ پر حملہ کیا تھا۔‘

کنہیا نے لکھا: ’جیٹ ایئر ویز جس پر حملہ ہوا اور جس نے حملہ کیا اس میں کوئی تمیز نہیں کرنا چاہتی۔ اگر آپ شکایت کریں گے تو وہ آپ کو طیارے سے اتار دیں گے۔‘

ابھی اس واقعے پر جیٹ ایئر ویز کی جانب سے کوئی باضابطہ بیان نہیں آیا ہے۔

ممبئی سے بی بی سی کے نامہ نگار سشات موہن نے جیٹ ایئر ویز کے حکام کے حوالے سے بتایا ہے کہ اس سلسلے میں باضابطہ بیان جلد جاری کیا جائے گا۔

انھوں نے حکام کے حوالے سے بتایا کہ کنہیا کمار اور ایک دوسرے شخص کے درمیان جھگڑا ہونے پر قوانین کے تحت دونوں کو طیارے سے اتار دیا گیا۔

اسی بارے میں