انڈیا میں جنسی مجرموں کا رجسٹر شائع کرنے کا منصوبہ

مظاہرے تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption بھارت میں طالبہ کے ریپ کے بعد ملک بھر میں مظاہرے ہوئے تھے

ایک انڈین وزیر کے مطابق بھارتی حکومت جنسی جرائم میں ملوث افراد کا رجسٹر شائع کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے۔

داخلہ امور کی جونیئر وزیر کرن رجیجو کے مطابق مختلف وزارتوں کے ساتھ مشاورت کے بعد ہدایات تیار کی جا رہی ہیں۔

یہ اقدام تین سال سے زیادہ عرصہ پہلے دہلی میں ایک طالبہ کے ریپ اور قتل کے واقعے کے بعد جنسی تشدد کے خلاف اٹھائے جانے والے سخت اقدامات کے وسیع تر مطالبات کے بعد کیا جا رہا ہے۔

اس واقعے کے بعد ملک بھر میں ہونے والے احتجاج کے بعد ریپ کے خلاف سخت قوانین نافذ کیے گئے تھے۔ تاہم اس کے باوجود ملک میں عورتوں اور بچوں کے خلاف پرتشدد جنسی حملے ہوتے رہتے ہیں۔

مجوزہ رجسٹر میں جنسی مجرموں کے متعلق مختلف قسم کی تفصیل ہو گی جس میں ان کے نام، پتے، ٹیلیفون نمبر اور حالیہ تصویر شامل ہیں۔

ان جرائم میں کسی کا غلط نیت سے پیچھا کرنا اور شہوت نظری بھی شامل ہے۔

وزارتِ داخلہ کی ایک اور جونیئر وزیر بارتھی بھائی چوہدری نے کہا کہ ’اس سے دوبارہ جنسی جرم کے بارے میں سوچنے والوں کے ذہنوں میں خوف پیدا ہو گا اور عوام کو اس سے بہت فائدہ ہو گا۔‘

حکام کا کہنا ہے کہ منصوبہ ابھی ابتدائی شکل میں ہے اور اسے عوامی مشاورت کے لیے بھی پیش کیا جائے گا۔

اسی بارے میں