چین میں طوفان اور آندھی سے 78 افراد ہلاک

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

چین کے سرکاری میڈیا کا کہنا ہے کہ ملک کے مشرقی صوبے جیانگسو میں ژالہ باری اور تیز ہواؤں سے کم سے کم 78 افراد ہلاک ہو گئے ہیں اور 500 سے زائد افراد زخمی ہیں۔

جمعرات کی شب آنے والے اس طوفان کے ساتھ تیز بارشیں بھی ہوئیں۔

طوفان کے باعث زخمی ہونے والے تقریباً 500 افراد میں سے دو سو کی حالت تشویشناک ہے جبکہ درجنوں مکان بھی تباہ ہو گئے ہیں۔

رواں ہفتے کے آغاز میں جنوبی چین میں آنے والے سیلاب سے 22 افراد ہلاک ہو گئے تھے۔

طوفان کے بارے میں منظر عام پر آنے والے ایک ویڈیو میں زخمی بچہ جیسے ہسپتال منتقل کیا جا رہا ہے اور گاڑیاں الٹی پڑی ہیں، درخت اکھڑ گئے ہیں اور سٹریٹ لایٹس کے کھمبے گر گئے ہیں بجلی کی فراہمی کا نظام بری طرح متاثر ہوا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

ایک مقامی رہائیشی نے چین کی سرکاری نیوز ایجنسی شن ہوا کو بتایا کہ ’یہ بالکل ایسا تھا جیسے دنیا ختم ہو گئی ہے۔‘

’میں تیز آندھی کی آواز سنی تو کھڑکی بند کرنے کے لیے اوپر بھاگا۔ میں ابھی مشکل سے ہی اوپر کی منزل پر پہنچا تھا کہ میں نے ایک زوردار آواز سنی اور دیکھا کہ کھڑکی سمیت دیوار گر چکی ہے۔‘

تصویر کے کاپی رائٹ Reuters

چین کے صدر شی جن پنگ نے طوفان سے متاثرہ افراد کی ’ہر ممکن امداد‘ کا حکم دیا ہے۔

رواں ہفتے کے دوران چین کے بیشترً علاقوں میں طوفانی بارشیں ہوئی ہیں۔ ملک کے جنوبی حصے میں آنے والے سیلاب سے تقریباً دو لاکھ افراد متاثر ہوئے ہیں۔

ایک اندازے کے مطابق ان سیلاب کی وجہ سے معیشت کو 41 کروڑ ڈالر کا نقصان ہوا ہے۔

اسی بارے میں