مندر اب حصص کا چڑھاوا بھی قبول کرے گا

تصویر کے کاپی رائٹ WikimediaDarwinian

انڈیا کے مغربی شہر ممبئی کے ایک مندر کے لیے بینک اکاؤنٹ کھولا گیا ہے جس میں عبادت کے لیے آنے والے پیسوں کی بجائے حصص عطیات میں دے سکیں گے۔

سدھی وینائیک مندر میں اطلاعات کے مطابق عبادت کے لیے آنے والوں میں امیر اور طاقتور افراد شامل ہیں جن کے لیے اکاؤنٹ کھولا گیا ہے جس میں وہ اپنے حصص عطیہ کر سکتے ہیں۔

خبر رساں ایجنسی پریس ٹرسٹ آف انڈیا کے مطابق اس طرح سے لوگ ہندو مذہب کے دیوتا گنیش کو کمپنی حصص اور سکیورٹی بانڈز نذرانے میں پیش کر سکیں گے۔

اس اکاؤنٹ کی سہولت ممبئی کی مقامی انویسٹمنٹ بینک ایس بی آئی سی اے پی سکیورٹیز نے فراہم کی ہے تاکہ لوگ پیسوں اور سونے کے علاوہ عطیات دے سکیں۔

مندر کو چلانے والے ٹرسٹ کے چیئرمین نریندرا مُراری رین کا کہنا ہے کہ ’ہم یہ پیغام دینا چاہتے ہیں کہ ہم حصص بھی قبول کرتے ہیں۔‘

ہر ماہ سدھی وینائیک مندر دسیوں ہزاروں افراد عبادت کے لیے آتے ہیں اور اس نئی الیکٹرانک بینکنگ سروس کا مطلب ہے کہ جو کوئی بھی اپنے حصص عطیہ کرنے کی خواہش رکھتے ہیں وہ اب کہیں سے بھی کر سکتے ہیں۔

فائنشل ایکسپریس اخبار سے بات کرتے ہوئے ایس بی آئی سی اے پی کے مینیجنگ ڈائریکٹر مانی پلویسن نے کہا کہ ’اس اقدام سے لاکھوں عقیدت مند متبادل مالی نذرانے بروقت اور آسانی کے ساتھ پیش کر سکیں گے۔‘

ممبئی کے اس مندر کے بعد آندرا پردیش میں بھی ایک مندر میں الیکٹرانک سکیورٹیز کا نظام قائم کیا گیا ہے۔

اسی بارے میں