چین میں سیلاب سے کم از کم 78 ہلاک، درجنوں لاپتہ

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption سرکاری خبررساں ادارے شن ہوا کے مطابق سب سے زیادہ ہلاکتیں شمالی صوبے ہیبی میں ہوئی ہیں

چین کے سرکاری میڈیا اور حکام کے مطابق ملک کے شمالی اور وسطی حصوں میں بارشوں اور سیلاب سے کم از کم 78 افراد ہلاک اور درجنوں لاپتہ ہوگئے ہیں۔

سیلابی ریلوں اور مٹی کے تودے گردے سے صوبہ ہیبی اور ہینان میں ہزاروں مکان تباہ ہوگئے ہیں جبکہ فصلوں کو بھی بھاری نقصان پہنچا ہے۔

خبررساں ادارے روئٹرز کے مطابق سیلاب زدہ علاقوں سے کم ازکم ایک کروڑ 60 لاکھ افراد نقل مکانی پر مجبور ہوئے ہیں۔

چینی حکام کا کہنا ہے کہ وہ سیلاب زدہ علاقوں کے لیے فنڈز جاری کریں گے۔

چین کے سرکاری خبررساں ادارے شن ہوا کے مطابق سب سے زیادہ ہلاکتیں شمالی صوبے ہیبی میں ہوئی ہیں جہاں 50 ہزار سے زائد مکان تباہ اور 80 لاکھ سے زایئد افراد متاثر ہوئے ہیں۔

تصویر کے کاپی رائٹ Getty
Image caption متاثرہ علاقے کے رہائشیوں نے موسمی حالات کی بروقت اطلاع نہ دینے پر مقامی حکام کو مورد الزام ٹھہرایا ہے

شن ہوا کے مطابق بہت سارے علاقوں میں بجلی کی فراہمی بھی معطل ہے اور مواصلاتی اور آمدورفت کا نظام بھی متاثر ہوا ہے۔

وسطی صوبے ہینان میں تیز ہواؤں اور طوفان سے کم از کم 15 افراد کی ہلاکت کی اطلاعات ہیں۔

خبررساں ادارے روئٹز کے مطابق یہاں 18 ہزار گھروں کو نقصان پہنچا ہے جبکہ 72 لاکھ افراد اپنا گھر بار چھوڑنے پر مجبور ہوئے ہیں۔

علاقے کے رہائشیوں نے موسمی حالات کی بروقت اطلاع نہ دینے پر مقامی حکام کو مورد الزام ٹھہرایا ہے۔

چینی حکام کے مطابق رواں سال بارشوں اور سیلاب میں 200 سے زائد افراد ہلاک ہوچکے ہیں۔

ایک اندازے کے مطابق ایک لاکھ 50 ہزار ہیکٹر رقبے پر فصلوں کو نقصان ہوا ہے جبکہ کل نقصان کا تخمینہ تین ارب ڈالر لگایا گیا ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ EPA
Image caption چینی حکام کا کہنا ہے کہ وہ سیلاب زدہ علاقوں کے لیے فنڈز جاری کریں گے

اسی بارے میں