گاندھی خاندان 26 برس بعد ایودھیا کے دورے پر

تصویر کے کاپی رائٹ Samiratmaj Mishra
Image caption ریاست اترپردیش میں آئندہ برس انتخابات ہونے والے ہیں اور راہول گاندھی کی یاترا اسی پس منظر میں ہورہی ہے اس لیے اس پر سبھی سیاسی مبصرین اور ماہرین کی نظریں ہیں

انڈیا میں کانگریس پارٹی کے نائب صدر راہول گاندھی دسمبر 1992 میں ایودھیا کی تاریخی بابری مسجد کے انہدام کے بعد اس شہر کا دورہ کرنے والے گاندھی خاندان کے پہلے رکن بن گئے ہیں۔

وہ ریاست اترپردیش کے دورے کے دوران مندروں کے شہر ایودھیا پہنچے جہاں انھوں نے ہنومان گڑھی کے مندر میں پوجا کی۔

ریاست اترپردیش میں آئندہ برس ہونے والے انتخابات سے قبل راہول گاندھی ریاست کا دورہ کر رہے ہیں۔

ابھی یہ واضح نہیں کہ راہول گاندھی ایودھیا میں بابری مسجد کے مقام پر تعمیر ہونے والے عارضي مندر کا دورہ کریں گے یا نہیں، ہنومان گڑھی سے محض ایک کلومیٹر کے فاصلے پر ہی وہ متنازع مقام ہے۔

یو پی کے دورے کے دوران راہول گاندھی کا ہنومان گڑھی کے مقام پر جانا پہلے پروگرام کا حصہ نہیں تھا لیکن اطلاعات کے مطابق بدھ کی رات کو اچانک اس مقام کو اُن کے پروگرام میں شامل کر دیا گیا۔

تصویر کے کاپی رائٹ Samiratmaj Mishra
Image caption ابھی یہ واضح نہیں کہ راہول گاندھی ایودھیا میں بابری مسجد کے مقام پر تعمیر ہونے والے عارضي مندر کا دورہ کریں گے یا نہیں

بعض سیاسی مبصرین کا خیال ہے کانگریس پارٹی سیاسی نکتۂ نظر سے سافٹ ہندوتوا کی پالیسی پر چلنے کی کوشش کر رہی ہے تاکہ وہ اپنی کھوئی ہوئی سیاسی طاقت کو دوبارہ بحال کر سکے۔

راہول ایودھیا کے بعد روڈ شو کرتے ہوئے امبیڈكر نگر پہنچں گے جہاں وہ كچوچھا شریف کا دورہ کے دوران معروف درگاہ پر بھی چادر چڑھائیں گے۔

یاد رہے کہ 1989 میں اس وقت کے وزیر اعظم اور راہول گاندھی کے والد راجیو گاندھی نے پارلیمانی انتخابات کے لیے اپنی پارٹی کی انتخابی مہم کا آغاز بھی ایودھیا سے ہی کیا تھا لیکن اس وقت بعض مصروفیات کے سبب وہ ہنومان گڑھی نہیں جا پائے تھے۔

تصویر کے کاپی رائٹ
Image caption راہول گاندھی نے ایودھیا پہنچنے کے بعد ہنوماں گڑھی کے مندر میں پوجا کی اور لوگوں سے ملاقات کی

1990 میں بھی خیر سگالی دورے کے دوران راجیو گاندھی کا گزر ایودھیا سے ہوا تھا۔

لیکن بابری مسجد کے انہدام کے بعد سے ہنومان گڑھی تو دور، ایودھیا بھی ان کے خاندان کا کوئی کانگریسی رہنما نہیں گیا۔

پارٹی کی صدر سونیا گاندھی نے ماضی میں کئی بار ضلع فیض آباد میں جلسے کیے ہیں لیکن اُن کا اسی ضلعے کے ایک چھوٹے سے قصبے ایودھیا جانا نہیں ہوا۔

بھارتی ذرائع ابلاغ میں راہول گاندھی کے اس دورے کو بڑی اہمیت دی جا رہی ہے اور سبھی سیاسی جماعتوں کی بھی اس پر نظریں لگی ہوئی ہیں۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں