اپ کی ڈیوائس پر پلے بیک سپورٹ دستیاب نہیں

’اگر یہ مسئلہ ہے تو اسے حل ہونا چاہیے‘

بھارت کے زیرِ انتظام کشمیر میں اوڑی سیکٹر میں چار شدت پسندوں کے بھارتی فوج کے بریگیڈ ہیڈکواٹر میں گھس کر اٹھارہ فوجیوں کی ہلاکت کے واقعے کے بعد سے پاکستان اور بھارت کے درمیان پیدا ہونے والی کشیدگی بڑھتی جا رہی ہے۔

بھارت نے اس کا الزام پاکستان پر عائد کیا اور لائن آف کنٹرول پر فوج کی نقل و حرکت تیز کر دی۔ کئی جگہوں پر درمیانی اور بھاری توپیں جن میں بوفرز بھی شامل تھیں نصب کر دی گئیں ۔

پاکستان نے سختی سے ان الزامات کی تردید کی ہے اور بھارت کی طرف سے دھمکیوں کے پیش نظر سرحد کی اپنی جانب فوج کو چوکس کر دیا ہے۔

لائن آف کنٹرول میں کشیدگی سے اس متنازع علاقے میں دونوں اطراف بسنے والے لوگوں میں سراسیمگی اور تشویش پائی جاتی ہے۔

بی بی سی نے بھارت کے زیر انتظام کشمیر میں ایک خاتون عابدہ سے بات چیت کی۔