ڈرون کی پرواز سے دبئی ایئرپورٹ بند

تصویر کے کاپی رائٹ AP
Image caption یہ پہلا موقع نہیں کہ دبئی کے ہوائی اڈے کو ڈرونز کی وجہ سے پروازیں روکنا پڑی ہوں

متحدہ عرب امارات میں دبئی کے حکام کا کہنا ہے کہ ہوائی اڈے کے قریب ڈرون اڑائے جانے کی وجہ سے آدھے گھنٹے کے لیے پروازیں معطل کرنا پڑیں۔

بدھ کو مقامی وقت کے مطابق صبح آٹھ بجے ہوائی اڈے کے قریب بغیر اجازت کے ڈرون پرواز کر رہا تھا جس کی وجہ سے حکام کو مسافر طیاروں کی پروازیں روکنا پڑیں۔

یاد رہے کہ کوئی بھی ایسا طیارہ جسے پائلٹ کے بغیر زمین سے کنٹرول کرتے ہوئے اڑایا جائے، اسے ڈرون تصور کیا جاتا ہے۔

کئی کمپنیوں نے چھوٹے ڈرون طیارے مارکیٹ میں متعارف کروائے ہیں جن سے مختلف کام لیے جاتے ہیں، مثال کے طور پر کیمرے لگا کر فلموں کے لیے عکس بندی یا پھر فضا سے کھیتوں پر ادویات کا چھڑکاؤ۔

ہوائی اڈے کے حکام نے بتایا کہ صبح آٹھ بج کر 35 منٹ پر پروازیں بحال کر دی گئی ہیں۔ خیال رہے کہ دبئی کا ایئر پورٹ دنیا کے مصروف ترین ہوائی اڈوں میں سے ایک ہے۔

حکام نے ٹوئٹر پر پیغام میں کہا کہ ’ہم تمام ڈرون آپریٹروں کو باور کراتے ہیں کہ ہوائی اڈے یا لینڈنگ کے کسی بھی علاقے کے ارد گرد پانچ کلومیٹر تک کسی قسم کا ڈرون اڑانا منع ہے۔‘

یہ پہلا موقع نہیں کہ دبئی کے ہوائی اڈے کو ڈرونز کی وجہ سے پروازیں روکنا پڑی ہوں۔

12 جون کو بھی ایسے ہی ایک واقعے کی وجہ سے ایئرپورٹ ایک گھنٹے سے زیادہ وقت کے لیے بند کرنا پڑا تھا۔

ان واقعات کے بعد دبئی میں حکام کا کہنا ہے کہ ملک میں ڈرونز کی خریداری اور استعمال کے حوالے سے قوانین سخت تر کریں گے۔

اس وقت ڈرون مالکان کو اپنے طیاروں کو متحدہ عرب امارات کی جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کے پاس اندراج کرنا ہوتا ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں