پشاور میں دھماکہ بارہ زخمی

پاکستان کے صوبہ خیبر پختون خوا کے دارالحکومت پشاور میں حکام کا کہنا ہے کہ ایک مارکیٹ میں ہونے والے بم دھماکے میں خاتون اور بچے سمیت کم سے کم گیارہ افراد زخمی ہوگئے ہیں۔

پولیس کے مطابق یہ واقعہ بدھ کو پشاور شہر کے مضافاتی علاقے متھرا میں اس وقت پیش آیا جب فقیر کلی چوک میں واقع کاسمیٹکس کی ایک دکان کو بم دھماکےمیں نشانہ بنایا گیا۔

تھانہ متھرا کے انچارج جہانگیر خان نے پشاور میں بی بی سی کے نامہ نگار رفعت اللہ اورکزئی کو بتایا کہ دھماکے میں کم سے کم گیارہ افراد زخمی ہوئے جن میں خاتون اور دو بچے شامل ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دھماکے سے دکان کو بھی نقصان پہنچا ہے۔

زخمیوں کو لیڈی ریڈنگ ہسپتال پشاور منتقل کردیا گیا ہے۔ اس واقعہ کی وجہ فوری طورپر معلوم نہیں ہوسکی اور نہ ہی کسی تنظیم نے ابھی تک اس کی ذمہ داری قبول کی ہے۔

خیال رہے کہ اس دھماکے سے تقریباً دو گھنٹے قبل پشاور پولیس کے سربراہ سید امتیاز الطاف نے پشاور میں صحافیوں سے گفتگو میں کہا تھا کہ پشاور شہر میں گزشتہ کچھ عرصہ سے امن و امان کی صورتحال کافی حد تک بہتر ہوگئی ہے جس سے شہر میں تجارتی سرگرمیاں بھی بحال ہوگئی ہیں جبکہ دھماکوں اور حملوں کی وجہ سے شہر چھوڑنے والے بیشتر تاجر اب واپس آچکے ہیں۔