لوک پال پر بحث اور انّا کی بھوک ہڑتال

بھارتی پارلیمان میں منگل سے بدعنوانی کے خلاف ایک موثر قانون بنانے کی غرض سے لائے جانے والے لوک پال بل پر بحث کا آغاز ہو گیا ہے۔

ادھر حکومتی بل کے مخالف اور ایک مضبوط احتسابی ادارے کا مطالبہ کرنے والے سماجی کارکن انا ہزارے نے ممبئی میں اپنی تین روزہ بھوک ہڑتال شروع کردی ہے۔

پارلیمانی امور سے متعلق مرکزی وزیر نارائن سوامی نے بحث کا آغاز کرتے ہوئے حکومت کے ذریعے پیش کیے گئے بل کی زبردست وکالت کی اور کہا کہ یہ بل ایک سنگِ میل ثابت ہوگا۔

ان کا کہنا تھا کہ ’جو افراد اسے کمزور بل قرار دے رہے ہیں انہوں نے اسے پڑھا نہیں ہے۔ اس میں تمام طرح کے چیک اینڈ بیلنسز کا خیال رکھا گيا ہے اور بہت سے لوگ اس پر محض سیاست کر رہے ہیں‘۔

بھوک ہڑتال کے لیے ممبئی روانہ ہونے سے پہلے انا نے صحافیوں سے بات چیت میں کہا کہ ’یہ تحریک کسی فریق ، پارٹی یا شخصیت کی مخالفت میں نہیں بلکہ بدعنوانی کے خلاف ہے‘۔

انّا ہزارے کی ٹیم نے اس موجودہ بل کو’ کمزور اور بےکار‘ قرار دیا ہے۔