وزیراعظم گیلانی کو توہین عدالت کا نوٹس

پاکستان کی سپریم کورٹ نے وزیراعظم پاکستان یوسف رضا گیلانی کو توہینِ عدالت کا نوٹس جاری کرتے ہوئے انہیں انیس جنوری کو عدالت میں طلب کر لیا ہے۔

عدالت نے یہ حکم پیر کو قومی مصالحتی آرڈیننس کیس کے فیصلے پر عملدرآمد کے مقدمے کی سماعت کے دوران دیا۔

عدالت نے کہا ہے کہ وزیراعظم انیس جنوری کو خود عدالت میں پیش ہوں۔

یہ نوٹس اٹارنی جنرل آف پاکستان کے اس جواب کے بعد جاری کیے گئے کہ انہیں سوئس حکام کو خط لکھنے کے بارے میں وزیراعظم یا صدر سے کوئی ہدایات نہیں ملیں۔

اس سے قبل سماعت کے دوران عدالت نے کہا کہ یہ تاثر صحیح نہیں کہ چھ آپشنز حکومت کو دیے گئے بلکہ یہ آپشنز تو عدالت کے لیے ہیں۔

جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے پانچ رکنی بینچ نے منگل کے روز اپنے متفقہ فیصلے میں چیف جسٹس سے اس معاملے پر لارجر بینچ بنانے کی استدعا کرتے ہوئے چھ آپشنز دی تھیں جن میں وزیر اعظم اور سیکرٹری قانون کے خلاف توہین عدالت کی کارروائی، این آر او عدالتی فیصلے پر عمل درآمد کے لیے کمیشن کی تشکیل کے علاوہ اس معاملے کو عوام یا پارلیمان میں اُن کے نمائندوں کو سپرد کرنے کے بارے میں بھی بات کی گئی تھی۔