صحافیوں کا قومی اسمبلی، سینیٹ سے واک آؤٹ

پاکستانی پارلیمان کے دونوں ایوانوں سینیٹ اور قومی اسمبلی کی پریس گیلریز سے بدھ کی شام کو صحافیوں نے چارسدہ میں صحافی مکرم خان کے قتل کے خلاف احتجاجی واک آؤٹ کیا۔

وفاقی وزیر قانون مولا بخش چانڈیو، وزیر برائے سائنس و ٹیکنالوجی چنگیز خان جمالی اور قومی اسبلی میں مسلم لیگ نون کے چیف وہپ شیخ آفتاب صحافیوں کو منانے آئے اور یقین دہانی کرائی کہ حکومت قاتلوں کو گرفتار کر کے سخت سزا دلوائے گی۔

صحافیوں کے نمائندوں نے وفاقی وزارء سے شکوہ کیا کہ آج تک کسی صحافی کے قاتل نہیں پکڑے گئے اور حتیٰ کہ اسلام آباد سے اغوا ہونے کے بعد قتل کیے جانے والے صحافی سلیم شہزاد کے قتل کی عدالتی جانچ کمیشن نے جو رپورٹ پیش کی ہے اس میں قاتلوں کی نشاندہی نہیں کی گئی۔

لیکن بعد میں وفاقی حکومت کی زبانی یقین دہانی کے بعد صحافیوں نے دونوں ایوانوں کے ایک ہی وقت میں جاری اجلاسوں کی پریس گیلریز کا واک آؤٹ ختم کردیا۔

خیال رہے کہ منگل کی شام کو پاکستان کے صوبہ خیبر پختونخواہ کے ضلع چارسدہ میں شبقدر کے مقام پر نامعلوم افراد نے فائرنگ کر کے مہمند ایجنسی کی رپورٹنگ کرنے والے مقامی صحافی مکرم خان کو ہلاک کر دیا تھا۔

اسی بارے میں