فرضی پولیس مقابلے، ’دوبارہ تفتیش کا حکم‘

بھارت کی سپریم کورٹ نے گجرات میں سنہ دو ہزار تین اور دو ہزار چھ کے درمیان ہونے والے ان بیس سے زیادہ واقعات کی دوبارہ سے تفتیش کرانے کا حکم دیا ہے جن میں پولیس پر بے قصور لوگوں کو فرضی مقابلوں میں ہلاک کرنے کا الزام ہے۔

سپریم کورٹ کے اس حکم سے گجرات کے وزیر اعلی نریندر مودی کی مشکلات بڑھ سکتی ہیں جن کے قریبی معاونین پر پہلے ہی سہراب الدین شیخ اور عشرت جہاں سمیت کئی دیگر افراد کو مختلف فرضی مقابلوں میں قتل کرنے کا مقدمہ چلایا جارہا ہے۔

نریندر مودی کے قریبی ساتھی اور ان کی حکومت میں سابق وزیر داخلہ امت شاہ اور ریاست کے کئی سرکردہ پولیس افسران کو ان مقدامات کے سلسلے میں گرفتار کیا جاچکا ہے۔

امت شاہ ضمانت پر رہا ہیں لیکن عدالت نے ان کے گجرات میں داخل ہونے پر پابندی لگا رکھی ہے۔