پارسل بم ملزم کو اٹھارہ سال کی قید

انڈونیشیا کی ایک عدالت نے اسلامی شدت پسند پیپی فرنینڈو کو اٹھارہ سال قید کی سزا سنائی ہے۔

پیپی فرنینڈو پر گزشتہ سال پارسل بموں کے ذریعے اعتدال پسند مسلمانوں اور پولیس پر حملوں میں ملوث ہونے کا الزام تھا اور عدالت نے انہیں دہشت گردی کا مجرم قرار دیا ہے۔

خبر رساں ادارے ای ایف پی کے مطابق ان میں سے صرف ایک پارسل بم کامیاب ہوا تھا جس میں تین پولیس اہلکار زخمی ہوئے تھے۔

عدالت میں بتایا گیا کہ فرنینڈو کا گروہ مبینہ طور پر انڈونیشیا کے صدر کو قتل کرنے کی منصوبہ بندی بھی کر رہا تھا۔

دو ہزار دو میں بالی میں ہونے والے بم دھماکوں کے بعد سے انڈونیشیا شدت پسند کے خلاف جنگ میں مصروف ہے۔

بالی میں ہونے والے ان حملوں میں اکیس ممالک سے تعلق رکھنے والے غیر ملکی شہری ہلاک ہوئے تھے۔ ان میں 88 آسٹریلوی، 38 انڈونیشیائی اور 28 برطانوی شہری شامل تھے۔