کنوارے پن کے زبردستی ٹیسٹ، ڈاکٹر بری

مصر میں فوجی عدالت نے فوج کے ایک ڈاکٹر کو خواتین کے زبردستی کنوارے پن کے ٹیسٹ کرنے کے الزام سے بری کر دیا ہے۔

عدالت نے عدالتی کارروائی سامیرہ ابراہیم کی درخواست پر شروع کی تھی۔ مصر میں خواتین نے جیلوں میں زبردستی کنوارے پن کے ٹیسٹ کرانے کے خلاف احتجاج بھی کیا تھا۔

مصر کے سرکاری خبر رساں ادارے کے مطابق احمد عادل کو اس لیے بری کر دیا گیا کیونکہ جج کو گواہوں کے بیانات میں تضاد نظر آیا تھا۔

فیصلے کے وقت عدالت کے باہر مظاہرین جمع تھے جنھوں نے فیصلے کے خلاف احتجاج کیا۔

مصر میں بی بی سی کے نامہ نگار کا کہنا ہےکہ سامیرہ ابراہیم نے دعویٰ کیا کہ ان کو امید تھی کہ گواہ ان کے حق میں بولیں گے لیکن انھوں نے آخری لمحات میں اپنی کہانی بدل دی۔