کشمیر، ہزاروں بچوں کو عدالتوں کا سامنا

بھارت کے زیرانتظام کشمیر میں ہزاروں بچوں کو پولیس تھانوں میں طلبی اور عدالتوں میں حاضری کا سامنا ہے۔

ان بچوں کو دو ہزار دس اور دو ہزار گیارہ کے دوران بھارت مخالف مظاہروں اور فورسز پر پتھراؤ کے الزام میں گرفتار کیا گیا اور بعد میں ضمانت پر رہا کیا گیا تھا۔

ان بچوں کے والدین نے جمعرات کو مقامی عدالت میں وزیراعلیٰ عمرعبداللہ کے اُس وعدے کو ایک مذاق قرار دیا جس میں انہوں نے کمسن لڑکوں کے مقدمات واپس لے کر ’عام معافی‘ کا اعلان کیا تھا۔

جمعرات کو کئی کمسن بچوں کو عدالت میں پیشی کے لیے لایا گیا۔ ان میں بعض سکول سے براہ راست عدالت پہچنے تھے جبکہ بعض ابھی پولیس کی حراست میں ہی ہیں۔