’توہینِ عدالت کا قانون ہی موجود نہیں‘

پاکستان کی سپریم کورٹ میں وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کے خلاف توہینِ عدالت کے مقدمے کی سماعت کے دوران اٹارنی جنرل عرفان قادر نے کہا ہے کہ دو ہزار تین کا توہینِ عدالت آرڈیننس اب وجود ہی نہیں رکھتا اس لیے وزیراعظم کے خلاف توہینِ عدالت کی کارروائی کسی قانون کے تحت نہیں کی جا رہی۔

منگل کو سپریم کورٹ میں سماعت کا دوبارہ آغاز ہوا تو اٹارنی جنرل عرفان قادر نے بطور وکیلِ استغاثہ اپنے دلائل کا آغاز کیا۔

ان کا کہنا تھا کہ ملک میں اس وقت توہینِ عدالت کا کوئی قانون موجود نہیں اور دو ہزار تین کا توہینِ عدالت آرڈیننس اب وجود نہیں رکھتا۔

اس پر عدالت کا کہنا تھا کہ پاکستان کی پارلیمان نے توہینِ عدالت کے قانون کو آئین کے آرٹیکل دو سو ستر ڈبل اے کے تحت تحفظ دیا ہے۔