بی پی کے انجینئیر کو مجرمانہ الزامات کا سامنا

تیل کی صنعت کے برطانوی ادارے برٹش پیٹرلیئم یا بی پی کے ایک سابق انجینیئر کو خلیج میکسیکو میں تیل کے ایک کنویں سے رساؤ کے معاملے میں مجرمانہ الزامات کا سامنا ہے۔

خلیج میکسیکو میں تیل کا یہ رساؤ دو برس قبل ہوا تھا۔

ٹیکسس سے تعلق رکھنے والے انجینیئر کرٹ مکس زیر حراست ہیں اور ان پر الزام ہے کہ انہوں نے تیل کے کنویں سے اس رساؤ کو روکنے کی کوششیں ناکام ہوجانے سے متعلق سینکڑوں پیغامات ضائع کردیے تھے یا انہیں ڈلیٹ کردیا تھا۔

بی پی کا کہنا ہے کہ اس نے ثبوت و شواہد کو محفوظ کرنے کی خاطر خواہ کوشش کی تھی۔ امریکی تاریخ میں رساؤ کے اس سب سے بڑے واقعے میں گیارہ ملازمین ہلاک ہوئے تھے جبکہ دسیوں لاکھ بیرل تیل سمندر میں بہہ گیا تھا۔