اصغرخان کیس: وزارتِ داخلہ کی رپورٹ مسترد

سپریم کورٹ نے خفیہ ادارے ائی ایس آئی یعنی انٹر سروسز انٹیلیجنس کی طرف سے سیاست دانوں میں مبینہ رقوم کی تقسیم کے معاملے میں وزارت داخلہ کی طرف سے پیش کی گئی رپورٹ مسترد کردی۔

عدالت کا کہنا تھا کہ یہ رپورٹ اُس وقت کے ڈائریکٹر ایف آئی اے اور موجودہ وزیر داخلہ رحمان ملک کی یاداشتوں پر مبنی ہے جو کہ قانون کے مطابق قابل قبول نہیں ہیں۔

بدھ کو سپریم کورٹ کے چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری کی سربراہی میں تین رکنی بینچ سیاستدانوں میں رقم تقسیم کرنے سے متعلق ایئر مارشل ریٹائرڈ اصغرخان کی پیٹیشن کی سماعت کی۔

پیر کو اس پٹیشن کی سماعت کے موقع پر چیف جسٹس افتخار محمد چوہدری نے کہا تھا کہ عدالت مختلف افراد کی طرف سے داخل کروائے گئے بیان حلفی پر اس مقدمے کا فیصلہ نہیں کر سکتی۔