کشمیر: بندوق سے امن تک کا سفر

بھارت کے زیرِانتظام کشمیر سے برسوں پہلے مبینہ طور پر عسکری تربیت اور اسلِحے کے حصول کی خاطر پاکستان کے زیر انتظام کشمیر آنے والے نوجوان اب عسکریت پسندی ترک کر کے واپس اپنےگھروں کو لوٹ رہے ہیں۔’

کشمیری عسکری تنظیموں کے مطابق گذشتہ ڈیڑھ برس کے دوران اب تک لگ بھگ چھ سو کشمیری عسکریت پسند پرامن زندگی گزرانے کے لیے واپس بھارت کے زیرِانتظام کشمیر جا چکے ہیں۔

دوسری جانب عسکری تنظیموں کے اتحاد متحدہ جہاد کونسل کے عہدے داروں نے اعتراف کیا ہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے درمیان قیام امن کی کوششوں کی بحالی کے بعد پاکستانی حکام نے ان کے انتظامی اخراجات میں پچاس فیصد کمی کر دی ہے۔