سرحد پار سے حملے: ’فوجی کمیشن بھیجنے کا فیصلہ‘

آخری وقت اشاعت:  بدھ 15 اگست 2012 ,‭ 11:11 GMT 16:11 PST

افغانستان کے صدر حامد کرزئی کے مطابق صدر زرداری سے ہونے والی ملاقات میں دونوں رہنماوں نے سرحد پار سے ہونے والے حملوں کی تحقیقات کے لیے ایک مشترکہ فوجی ٹیم بھیجنے پر اتفاق کیا ہے۔

منگل کو افغان صدر حامد کرزئی نے سعودی عرب کے شہر مکہ میں بدھ کو منعقد ہونے والے او آئی سی اجلاس کے موقع پر صدر زرداری سے ملاقات کی۔

واضح رہے کہ سرحد پار سے بمباری، فائرنگ اور شدت پسندوں کے حملوں کے واقعات کی وجہ سے پاکستان اور افغانستان کے تعلقات میں تناؤ رہتا ہے۔

یہ واقعات اکثر اوقات پیش آتے رہتے ہیں اور دونوں ممالک ان حملوں کو روکنے میں ناکامی پر ایک دوسرے پر الزامات عائد کرتے ہیں۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔