توہین عدالت کیس میں وزیراعظم پیش ہونگے

آخری وقت اشاعت:  پير 27 اگست 2012 ,‭ 19:29 GMT 00:29 PST

سپریم کورٹ کا پانچ رکنی بینچ آج پیر کو قومی مفاہمتی آرڈیننس یعنی این آر او پر عمل درآمد کیس میں توہین عدالت کے مقدمے کی سماعت کرے گا۔

حکمران جماعت پیپلز پارٹی اور اس کی اتحادی جماعتوں نے ایوان صدر میں منعقدہ اجلاس میں فیصلہ کیا ہے کہ وزیراعظم راجہ پرویز اشرف پیر کو سپریم کورٹ میں پیش ہو نگے۔

سپریم کورٹ نے رواں ماہ کی آٹھ تاریخ کو این آر او پر عمل درآمد کے مقدمے میں وزیر اعظم راجہ پرویز اشرف کو توہینِ عدالت کے مقدمے میں اظہارِ وجوہ کا نوٹس جاری کرتے ہوئے ذاتی طور پر عدالت میں طلب کیا تھا۔

آٹھ اگست کو عدالت نے اپنے مختصر حکم نامے میں سابق وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کی نااہلی کا بھی حوالہ دیا تھا اور کہا کہ اسی مقدمے میں عدالتی احکامات کی حکم عدولی پر اُنہیں بطور رکن قومی اسمبلی نااہل قرار دیا گیا تھا جس کی وجہ سے اُنہیں وزارت عظمی سے بھی ہاتھ دھونا پڑے۔

وزیراعظم راجہ پرویز اشرف کے عدالت میں پیش ہونے کے حوالے سے اتوار کو ایوان صدر اسلام آباد میں وزیراعظم اور صدر زرداری کی صدارت میں حکمران اتحاد میں شامل سیاسی جماعتوں کے رہنماوں کا اجلاس منعقد ہوا۔

اجلاس کے بعد صدر زرداری کے ترجمان فرحت اللہ بابر کی جانب سے جاری ہونے والے بیان کے مطابق حکمران جماعت پیپلز پارٹی اور اس کی اتحادی جماعتوں نے فیصلہ کیا ہے کہ وزیراعطم عدالت میں پیش ہونگے۔

پاکستان کے سرکاری ٹیلی ویژن پی ٹی وی کے مطابق پیر کو سماعت کے موقع پر اتحادی جماعتوں کے رہنما وزیراعظم سے اظہار یکجہتی کے لیے ان کے ساتھ عدالت جائیں گے۔ اس کے علاوہ وفاقی وزراء بھی وزیراعظم کے ہمراہ ہونگے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔