’نتیجہ خیز بات چیت کے لیے پرامید ہیں‘

آخری وقت اشاعت:  پير 5 نومبر 2012 ,‭ 05:24 GMT 10:24 PST

شام میں اہم حکومت مخالف گروہ شامی نیشنل کونسل کے ایک ترجمان نے ان اطلاعات کی تردید کی ہے کہ قطر کے دارالحکومت دوحہ میں شامی صدر بشارالاسد کی حکومت کے مخالفین کو متحد کرنے کے لیے منعقدہ اجلاس میں سخت اختلافِ رائے سامنے آیا ہے۔

قطر میں بی بی سی سے بات کرتے ہوئے اسامہ مونجد کا کہنا تھا کہ یہ بات چیت نتیجہ خیز ثابت ہوگی۔

ان کا کہنا تھا کہ ’ہم پرامید ہیں کہ یہ مذاکرات بارآور ثابت ہوں گے اور ہم نہ صرف شامی نیشنل کونسل کی نئی قیادت، نیا صدر، نئی ایگزیکٹو کمیٹی منتخب کرنے میں کامیاب رہیں گے بلکہ حزبِ مخالف کے دیگر گروہوں سے جلاوطنی میں حکومت یا ایسی عبوری حکومت کے قیام پر بات چیت کریں گے جو خصوصاً شمالی اور شمال مغربی شام میں ان علاقوں کا انتظام سنبھالے جنہیں اسد حکومت کے قبضے سے چھڑوا لیا گیا ہے‘۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔