غلطیاں ہوئی ہیں: آرمی چیف

آخری وقت اشاعت:  پير 5 نومبر 2012 ,‭ 15:09 GMT 20:09 PST

چیف آف آرمی سٹاف جنرل اشفاق پرویز کیانی نے جنرل ہیڈکوارٹر میں فوجی افسران سے بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ ماضی میں ہم سب نے غلطیاں کی ہیں لیکن بہتر ہے کہ فیصلے قانون پر چھوڑ دیے جائیں۔

بری فوج کے سربراہ نے کہا ’ہم سب قانون کی عمل داری چاہتے ہیں اس لیے ہمیں یہ بنیادی اصول نہیں بھولنا چاہیے کہ ملزم صرف اس صورت میں ہی مجرم قرار پاتا ہے جب مجرم ثابت ہو جائے۔ ہمیں یہ حق حاصل نہیں ہے کہ ہم اپنے طور پر کسی کو بھی چاہیے وہ سویلین ہو یا فوجی، مجرم ٹھہرائیں اور پھر اس کے ذریعے پورے ادارے کو مورد الزام ٹھہرانا شروع کر دیں۔‘

انھوں نے مزید کہا کہ کوئی بھی کوشش جو مسلح افواج اور عوام میں دراڑ ڈال دے، وسیع تر قومی مفاد کے منافی ہے۔

فوج کے سربراہ کا کہنا تھا کہ ہم سب ماضی کی غلطیوں کا ناقدانہ جائزہ لے رہے ہیں اور کوشش میں ہیں کہ مستقبل میں صحیح راستے کا انتخاب کرسکیں۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔