’توہینِ عدالت کے استعمال سے میڈیا کو نہ دبایا جائے‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 27 نومبر 2012 ,‭ 07:41 GMT 12:41 PST

انسانی حقوق کے ادارے ہیومن رائٹس واچ نے کہا کہ پاکستان کے ججوں کو چاہیے کہ وہ توہینِ عدالت کی طاقت استعمال کر کے میڈیا کو عدالتی تنقید پر مبنی پروگرام نشر کرنے سے نہ روکیں۔

2009 میں پاکستان کی اعلیٰ عدلیہ کی بحالی کے بعد سے سپریم کورٹ اور ہائی کورٹس عدالتی کارروائیوں پر تنقید کو توہینِ عدالت کی دھمکی سے دبانے کی کوشش کرتی رہی ہیں۔

اکتوبر 2012 کے بعد سے اسلام آباد ہائی کورٹ اور لاہور ہائی کورٹ نے ایک حکم نامے کے تحت ٹیلی ویژن پروگراموں میں عدالت کے فیصلوں پر تنقید پر پابندی لگا دی تھی۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔