’دس سال میں ڈھائی ہزار ملین ڈالر بیرون ملک منتقل‘

آخری وقت اشاعت:  منگل 18 دسمبر 2012 ,‭ 01:37 GMT 06:37 PST

امریکہ کے ایک گروپ گلوبل فنانشل انٹیگریٹی کی تازہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ایک دہائی میں ترقی پذیر ممالک کو جرائم، بدعنوانی اور ٹیکس چوری کے باعث چھ کھرب ڈالر کا نقصان ہوا ہے۔

گلوبل فنانشل انٹیگریٹی نےاپنی تازہ رپورٹ میں کہا ہے کہ مختلف ممالک سے غیر قانونی طور پر فنڈز بیرون ملک لے جانے میں اضافہ دیکھنے کو آیا ہے۔

اس رپورٹ کے مطابق پچھلے دس سالوں میں پاکستان سے اوسطاً ڈھائی سو ملین ڈالر سالانہ غیر قانونی طور پر بیرون ملک منتقل ہوئے ہیں۔

اس فہرست میں چین پہلے نمبر، میکسیکو دوسرے اور ملائشیا تیسرے نمبر پر ہے۔ پاکستان اس فہرست میں چورانوے نمبر پر ہے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔