سندھ: خسرے سے ہلاکتیں، ذمہ دار محکمہ صحت

آخری وقت اشاعت:  بدھ 2 جنوری 2013 ,‭ 18:22 GMT 23:22 PST

پاکستان کے صوبہ سندھ کے وزیر اعلیٰ سید قائم علی شاہ نے خسرے سے 210 بچوں کی ہلاکت کا ذمہ دار صوبائی محکمہ صحت کو قرار دیا ہے اور ذمہ دار افسران کے خلاف کارروائی کی ہدایت جاری کی ہے۔

بدھ کو وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ نے خسرے کی بیماری کی روک تھام کے لیے ایک اجلاس کی صدارت کی۔

ان کا کہنا تھا کہ خسرے کی بیماری کے پھیلاو کے وجہ محکمہ صحت کے عملے کی غفلت اور غیر ذمے داری ہے۔

انہوں نے ہدایت کی کہ بارہ جنوری تک تمام بچوں کو خسرے سے بچاؤ کے ٹیکے لگائے جائیں اور تمام عملہ فیلڈ میں موجود رہے اور افسران اس کی نگرانی کریں۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔