بلوچستان میں 34 فیصد بچے سکول نہیں جاتے

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 8 فروری 2013 ,‭ 04:52 GMT 09:52 PST

پاکستان کے صوبے بلوچستان میں تعلیم کی صورتحال پر مرتب کی جانے والی ایک رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ صوبے میں چھ سے سولہ سال کی عمر کے چونتیس اعشاریہ ایک فیصد بچے سکول نہیں جاتے۔

سکول نہ جانے والوں میں بچوں میں سے اکیس فیصد لڑکیاں اور تیرہ فیصد لڑکے ہیں۔

بلوچستان میں تعلیم کی صورت حال کے بارے میں یہ رپورٹ جمعرات کو کوئٹہ میں ایک سیمینار میں جاری کی گئی جس کا اہتمام محکمۂ تعلیم بلوچستان نے تعلیم و آگاہی بلوچستان کے اشتراک سے کیا تھا۔

تعلیم کی حالت پر سالانہ رپورٹ ’اے ایس ای آر‘ میں بتایا گیا ہے کہ انفارمیشن ٹیکنالوجی کے اس دور میں بلوچستان میں صرف نو اعشاریہ چھ فیصد سرکاری ہائی سکولوں میں فعال کمپیوٹرلیب موجود ہیں تاہم نجی سکولوں میں اس کی شرح اٹھاون اعشاریہ تین فیصد ہے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔