پنجاب لشکر جھنگوی کی پناہ گاہ ہے: وزیر داخلہ

آخری وقت اشاعت:  جمعـء 1 مارچ 2013 ,‭ 09:29 GMT 14:29 PST

پاکستان کے وفاقی وزیر داخلہ رحمان ملک کا کہنا ہے کہ کالعدم شدت پسند تنظیم لشکر جھنگوی پنجاب کو اپنی پناہ گاہ کے طور پر استعمال کر رہی ہے۔

سرکاری ریڈیو کے مطابق وفاقی وزیر داخلہ نے جمعہ کو اسلام آباد میں صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کہا کہ کالعدم لشکر جھنگوی کے سات سو سے زیادہ کارکنوں کی فہرست سمیت تمام تفصیلات حکومت پنجاب کو فراہم کر دی گئی ہیں۔

وزیر داخلہ کے مطابق فہرست اس لیے دی گئی ہے تاکہ پنجاب حکومت لشکر جھنگوی کے کارکنوں کے خلاف بہت جلد کارروائی شروع کر سکے۔

خیال رہے کہ کوئٹہ میں شعیہ ہزارہ برادری پر شدت پسند حملوں کے بعد حکومت پر دباؤ میں اضافہ کالعدم لشکر جھنگوی کے خلاف کارروائی کے لیے دباؤ میں اضافہ ہوا ہے۔

وفاقی حکومت پنجاب حکومت پر الزام عائد کرتی رہی ہے کہ وہ لشکر جھنگوی سمیت دیگر شدت پسند تنظیموں کی پُشت پناہی کر رہی ہے تاہم صوبائی حکومت اس سے انکار کرتی ہے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔