ممبئی دھماکے، سنجے دت پانچ سال کے لیے جیل میں

آخری وقت اشاعت:  جمعرات 21 مارچ 2013 ,‭ 07:37 GMT 12:37 PST

بھارت کی سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ سنہ انیس سو ترانوے میں ہونے والے ممبئی دھماکوں میں ملوث ہونے پر فلم سٹار سنجے دت کو دوبارہ پانچ سال کے لیے جیل جانا ہو گا۔

فلم سٹار کو ممبئی دھماکے کیس میں چھ سال کی قید سنائی گئی تھی اور وہ سال دو ہزار سات سے ضمانت پر تھے۔

جمعرات کو عدالت نے اپنے فیصلے میں سنجے دت کی سزا چھ سال سے کم کر کے پانچ سال کر دی اور انہیں چار ہفتوں کا وقت دیا گیا ہے کہ وہ خود کو حکام کے حوالے کر دیں۔

سنجے دت سال دو ہزار چھ میں ممبئی میں حملے کرنے والوں سے ہتھیار ِخریدنے کے الزام میں مجرم قرار دیا گیا تھا اور وہ پہلے ہی اٹھارہ ماہ کی جیل کاٹ چکے ہیں۔

سال دو ہزار چھ میں انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت نے بم حملوں میں سو افراد کو مجرم قرار دیا تھا اور ان میں سے بارہ افراد کو سزائے موت اور بیس کو عمر قید سنائی تھی۔

جمعرات کو عدالت نے اپنے فیصلے میں ان حملوں کے مرکزی کردار یعقوب ممین کی سزائے موت برقرار رکھی جبکہ دس مجرموں کی سزائے موت کو عمر قید میں تبدیل کر دیا گیا۔

ممبئی میں سن انیس سو ترانوے میں سلسلہ وار بارہ بم دھماکے ہوئے تھے جن میں 257 افراد ہلاک اور 713 زخمی ہوئے تھے۔

اس وقت ٹاڈا عدالت اور سری کرشنا کمیشن رپورٹ نے قبول کیا تھا کہ یہ دھماکے بابری مسجد کے انہدام اور اس کے بعد پھوٹ پڑنے والے فسادات کے ردعمل کے طور پر ہوئے۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔