پی پی پی پی کو ’تیر‘ کا انتخابی نشان الاٹ

آخری وقت اشاعت:  پير 25 مارچ 2013 ,‭ 07:42 GMT 12:42 PST

پاکستان کے الیکشن کمیشن نے پی پی پی پی یعنی پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کو’تیر‘ کا انتخابی نشان الاٹ کر دیا ہے۔

پیر کو الیکشن کمیشن میں پاکستان پیپلز پارٹی کی رجسٹریشن اور’تیر‘ کے انتخابی نشان کے معاملے کی سماعت ہوئی۔

سماعت کے بعد پیپلز پارٹی کے رہنماء اور سابق چیئرمین سینیٹ فاروق ایچ نائیک نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز نے سال دو ہزار دو اور سال دو ہزار آٹھ کے انتخابات میں’تیر‘ کے نشان سے حصہ لیا تھا۔

انہوں نے کہا ہے کہ الیکشن کمیشن نے بہت منصفانہ فیصلہ کیا ہے کیونکہ آئین اور قانون کے مطابق پارٹی کے پرانے انتخابی نشان کو تبدیل نہیں کیا جا سکتا ہے۔

فاروق ایچ نائیک کے مطابق پی پی پی پی یعنی پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز اب تیر کے نشان سے انتخابات میں حصہ لے گی۔

پاکستان پیپلز پارٹی کی رجسٹریشن کے حوالے سے کیے جانے والے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پیپلزپارٹی کا فیصلہ ہو چکا ہے اور پارٹی انتخاب میں سابق گورنر پنجاب لطیف کھوسہ اب جماعت کے جنرل سیکرٹری اور بلاول بھٹو زرداری پیٹرن انچیف ہیں۔

خیال رہے کہ الیکشن کمیشن نے بیس مارچ کو سیاسی جماعتوں کو انتخابی نشان الاٹ کر دیے تھے تاہم کمیشن نے بعد میں پاکستان پیپلز پارٹی پارلیمنٹیرینز کو’تیر‘ کا انتخابی نشان الاٹ کرنے کا فیصلہ ملتوی کر دیا تھا۔

الیکشن کمیشن نے یہ فیصلہ پیپلزپارٹی کی سابق رہنما ناہید خان کی اس درخواست کے بعد کیا تھا جس میں انہوں نے کمیشن سے ’تیر‘ کا ہی نشان مانگا تھا۔

اس کے ساتھ ناہید خان، سابق وزیراعظم ذوالفقار بھٹو کے بیٹے میر مرتضیٰ بھٹو کی بیوہ اور پاکستان پیپلز پارٹی (شہید بھٹو) کی چئرپرسن غنویٰ بھٹو، پیپلز پارٹی کے سینیٹر جہانگیر بدر نے الیکشن کمیشن کو درخواستیں دی ہیں کہ پیپلز پارٹی کی رجسٹریشن ان کے نام پر کی جائے۔

پاکستان کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق پیر کو الیکشن کمیشن کے پنجاب سے رکن جسٹس ریٹائرڈ ریاض کیانی کی سربراہی میں تین رکنی کمیٹی اس معاملے کی سماعت کر رہی تھی۔

BBC © 2014 بی بی سی دیگر سائٹوں پر شائع شدہ مواد کی ذمہ دار نہیں ہے

اس صفحہ کو بہتیرن طور پر دیکھنے کے لیے ایک نئے، اپ ٹو ڈیٹ براؤزر کا استعمال کیجیے جس میں سی ایس ایس یعنی سٹائل شیٹس کی سہولت موجود ہو۔ ویسے تو آپ اس صحفہ کو اپنے پرانے براؤزر میں بھی دیکھ سکتے ہیں مگر آپ گرافِکس کا پورا لطف نہیں اٹھا پائیں گے۔ اگر ممکن ہو تو، برائے مہربانی اپنے براؤزر کو اپ گریڈ کرنے یا سی ایس ایس استعمال کرنے کے بارے میں غور کریں۔