کراچی: اے این پی کے رہنما پر بم حملے میں دس ہلاک

کراچی میں عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما بشیر جان پر بم حملہ کیا گیا ہے، جس میں دس افراد ہلاک اور 26 زخمی ہوگئے ہیں جن میں سے آٹھ کی حالت تشویش ناک بتائی جاتی ہے۔

یہ واقعہ رات کو ساڑہ نو بجے کے قریب سائیٹ کے علاقے قائد عوام کالونی میں پیش آیا ہے۔

سات لاشیں سول ہپستال دوعباسی شہید ہسپتال اور ایک لاش جناح ہسپتال لائی گئی ہے۔

عوامی نیشنل پارٹی کے رہنما بشیر جان کا جو حالیہ انتخابات میں پی ایس 93 سے امیدوار ہیں کہنا ہے کہ وہ ایک دوست کے ساتھ ملنے جا رہے تھے کہ ان کی گاڑیوں کے قافلے میں دھماکہ ہواجس میں وہ محفوظ رہے لیکن ان کے ساتھی اور آس پاس کے لوگ شدید زخمی ہوگئے ہیں اور انہیں کارکنوں نے ایک دوسری گاڑی میں محفوظ جگہ پر پہنچایا ہے۔

یاد رہے کہ اس سے پہلے صبح لانڈی کے علاقے میں اے این پی کے امیدوار عبدالرحمان پر کریکر سے حملہ کیا گیا تھا جس میں وہ محفوظ رہے تھے۔

ادھر کالعدم تحریک طالبان نے دونوں حملوں کی ذمہ داری قبول کی ہے۔تنظیم کے ترجمان احسان اللہ احسان نے بی بی سی کو بتایا ہے کہ اے این پی سیکیولر جماعت ہے دوسرا وہ گزشتہ حکومت کی اتحادی رہی ہے، جس کے دور حکومت میں خیبر پختون خواہ، بلوچستان اور کراچی میں بے گناہ لوگوں کو ہلاک کیا گیا۔