عراق: شیعہ اکثریتی علاقے میں تین دھماکے

عراق میں حکام کا کہنا ہے ملک کے جنوبی حصے میں شیعہ اکثریتی صوبوں میں کار بموں کے دھماکے میں متعدد افراد ہلاک ہوئے ہیں۔

دو دھماکے صوبہ میسان کے قصبے امارہ کے ایک بازار میں ہوئے جبکہ ایک دھماکے کا نشانہ دیوانیہ نامی قصبہ بنا۔

سنیچر کو عراقی وزیراعظم نوری المالکی نے عراق میں فرقہ وارانہ تشدد میں اضافے اور اس کے خطرات پر بات کی تھی۔

انہوں نے شام کا نام لیے بغیر کہا تھا کہ عراق میں تشدد کی واپسی کی وجہ ’خطے میں ایک اور جگہ تشدد کا آغاز ہے۔‘