صدارتی انتخاب تیس جولائی کو کرانے کا حکم

سپریم کورٹ نے الیکشن کمیشن کو صدارتی انتخاب رواں ماہ کی تیس تاریخ کو کرانے کا حکم دیا ہے۔

دوسری جانب حکمراں جماعت مسلم لیگ نون کے صدارتی امیدوار ممنون حسین نے اسلام آباد ہائی کورٹ میں کاغداتِ نامزدگی جمع کرا دیے ہیں۔ حزب اختلاف کی سب سے بڑی جماعت پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے رضا ربانی نے کاغداتِ نامزدگی جمع کرائے ہیں۔

سپریم کورٹ میں صدارتی انتخاب چھ اگست کی بجائے تیس جولائی کو کرانے کی درخواست مسلم لیگ نون نے گزشتہ روز منگل کو سپریم کورٹ میں دی تھی۔

پاکستان کے سرکاری ذرائع ابلاغ کے مطابق بدھ کو سپریم کورٹ کے چیف جسٹس کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے اس درخواست کی سماعت کرتے ہوئے الیکشن کمیشن کو صدارتی انتخاب تیس جولائی کو کرانے کا حکم دیا ہے۔

پاکستان مسلم لیگ نون اور اس کی اتحادی جماعتوں کو صدارتی انتخاب میں واضح برتری حاصل ہے۔

پیپلز پارٹی کے امیدوار کو عوامی نیشنل پارٹی اوربی این پی عوامی کی حمایت حاصل ہے۔ اس کے علاوہ پی پی پی دیگر سیاسی جماعتوں سے حمایت حاصل کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔

الیکشن کمیشن کے پرانے شیڈول کے مطابق کاغذات نامزدگی کی جانچ پڑتال 26 جولائی کو کی جائے گی جبکہ کاغذات واپس لینے کی آخری تاریخ 29 جولائی ہو گی۔