امریکہ کو تکلیف پہنچانے پر میننگ کی معافی

وکی لیکس کو امریکہ کی خفیہ حکومتی معلومات فراہم کرنے والے امریکی فوجی بریڈلی میننگ نے کہا ہے کہ انہیں افسوس ہے کہ ان کے اقدام سے امریکہ اور لوگوں کو تکلیف ہوئی اور وہ معافی کے خواستگار ہیں۔

پچیس سالہ میننگ نے یہ بات امریکی ریاست میری لینڈ میں اپنے کورٹ مارشل کی کارروائی کے دوران ایک بیان میں کہی ہے۔

بدھ کو عدالت کے سامنے اپنے بیان میں بریڈلی میننگ نے کہا کہ ’مجھے افسوس ہے کہ میرے اقدامات سے لوگوں کو تکلیف پہنچی۔ میں معذرت خواہ ہوں کہ اس سے امریکہ کو تکلیف ہوئی۔‘

ان کا کہنا تھا کہ ’میں اپنے اقدامات کے غیرمتوقع نتائج پر معافی کا طلبگار ہوں۔ گزشتہ تین برس میں میں نے بہت کچھ سیکھا ہے۔‘

انہوں نے کہا کہ ’جب میں نے یہ فیصلے کیے تو میں لوگوں کو تکلیف نہیں پہنچانا چاہتا تھا بلکہ میں تو ان کی مدد کا خواہاں تھا۔‘

میننگ نے کہا مقدمے کی سماعت اور قید کے بعد اب ان کا یقین ہے کہ انہیں نظام میں رہتے ہوئے ہی ان تبدیلیوں کے لیے کام کرنا چاہیے تھا جو وہ لانا چاہتے تھے۔