خودکار گاڑی، اوبر نے ٹسیٹ روک دیا

تصویر کے کاپی رائٹ UBER
Image caption اوبر اس تجربے کے لیے فورڈ گاڑیوں کا استعمال کر رہی ہے

معروف امریکی کار سروس کمپنی اوبر نے ریگولیٹر کی جانب سے بغیر ڈرائیور کے چلنے والی گاڑیوں کی رجسٹریشن منسوخ کیے جانے کے بعد سان فرانسسکو میں ان گاڑیوں کے ٹیسٹ کو روک دیا ہے۔

کمپنی نے حال ہی میں مسافروں کو بغیر ڈرائیور کے چلنے والی گاڑیوں کی بکنگ کا آپشن دیا تھا۔

لیکن حکام نے خبردار کیا ہے کہ اگر اوبر نے ٹیسٹ کے لیے خصوصی پرمِٹ نہ لیا تو اس کے خلاف قانونی کارروائی کی جائے گی۔

اوبر انتظامیہ نے کہا ہے کہ انھیں اس کی ضرورت نہیں کیونکہ سیٹ پر ‎سیفٹی ڈرائیور موجود ہے اس لیے خصوصی پرمٹ کی ضرورت نہیں ہے۔

تصویر کے کاپی رائٹ VOLVO
Image caption اوبر کا کہنا ہے کہ گاڑی میں ڈرائیونگ سیٹ پر سیفٹی ڈرائیور موجود ہے اسے پرمٹ کی ضرورت نہیں ہے

حکام کا کہنا ہے کہ کیلیفورنیا میں دیگر بیس کمپنیاں بغیر ڈرائیور کے چلنے والی گاڑیوں کا تجربہ کر رہی ہیں لیکن ان کے پاس خصوصی پرمٹ ہے۔

کیلیفورنیا میں گوگل جیسی دوسری کمپنیوں نے اس طرح کی ٹیسٹ ڈرائیونگ کے لیے باضابطہ پرمٹ حاصل کیا ہے۔

ہر پہلی دس گاڑیوں کے پرمٹ کے لیے ڈیڑھ سو ڈالر خرچہ آتا ہے جبکہ اس کے علاوہ مزید 10 گاڑیوں کے لیے 50 ڈالر چارج کیے جاتے ہیں۔

حکام کی جانب سے اوبر کو قانونی کارروائی کی دھمکی ملنے سے قبل سان فرانسسکو میں اوبر کی بغیر ڈرائیور کے چلنے والی ایک گاڑی کی ویڈیو یوٹیوب پر اپ لوڈ کی گئی جو ریڈ سگنل کو پار کر کے رک رہی تھی۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں