سیارہ تلاش کریں اور اپنی مرضی کا نام دیں

جنوبی کرے کا آسمان تصویر کے کاپی رائٹ ANU
Image caption جنوبی کرے کا آسمان نسبتاً کم کھوجا گیا ہے اس لیے یہاں نواں سیارہ ملنے کے امکانات زیادہ ہیں

کیا آپ نے کبھی کوئی سیارہ دریافت کرنے کے بارے میں سوچا ہے؟ یہ کام اتنا مشکل کام نہیں ہے جتنا آپ سمجھتے ہیں۔

آسٹریلیا کی نیشنل یونیورسٹی کے ماہرینِ فلکیات کو نظامِ شمسی کے نویں سیارے کی تلاش کے لیے عوام کی مدد درکار ہے۔

اس سیارے کے بارے میں خیال کیا جا رہا ہے کہ وہ پلوٹو کے مدار کے باہر پایا جاتا ہے۔ ایک ویب سائٹ پر پوسٹ کی جانے والی تصاویر میں سے سیارہ ڈھونڈ نکالنے والے شخص کو موقع دیا جائے گا کہ وہ اس کا نام خود رکھ سکے۔

اس ویب سائٹ پر خودکار دوربین سے لی گئی لاکھوں تصاویر پوسٹ کی گئی ہیں، جن میں جنوبی نصف کرے کا آسمان دکھائی دیتا ہے۔ شمالی کرے کے آسمان کے لیے اسی قسم کی کھوج گذشتہ ماہ ناسا نے کی تھی۔

نیشنل یونیورسٹی کے ماہرِ فلکیات ڈاکٹر بریڈ ٹکر نے امید ظاہر کی کہ سیارہ نمبر 9 جنوبی کرے کے نسبتاً کم کھوجے گئے آسمان پر نظر آ جائے گا۔

Image caption کائپر بیلٹ سے باہر اجسام کے مداروں سے اندازہ ہوتا ہے کہ نواں سیارہ موجود ہے

انھوں نے بی بی سی کو بتایا: 'اگر یہ سیارہ واقعی وجود رکھتا ہے تو یہ ان لاکھوں تصاویر میں سے کسی ایک میں پہلے ہی سے موجود ہے۔ ہم نے سوچا کہ ہم عوام کو بھی دعوت دیں کہ وہ ہمارے ساتھ مل کر اسے ڈھونڈ نکالنے میں مدد دے۔'

اگرچہ سیارہ دریافت کرنے والے سے رائے لی جائے گی، لیکن حتمی اختیار عالمی ادارۂ فلکیات آئی اے یو کے پاس ہے۔

ڈاکٹر ٹکر نے کہا کہ 'میں ذاتی ووٹ ایک اور یونانی دیوتا کا نام ہے۔ یہ دیوتا ویسے بھی بہت زیادہ ہیں۔'

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں