'پیرس معاہدے پر قائم رہنا انتہائی ضروری ہے'

ماحول تصویر کے کاپی رائٹ AFP
Image caption اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیرس

اقوام متحدہ کے سیکریٹری جنرل انتونیو گوتیرس نے کہا ہے کہ دنیا کے لیے 'انتہائی ضروری' وہ ماحولیاتی تبدیلی سے پیدا ہونے والے خطرے کا سامنا کرنے کے لیے متحد ہو جائے۔

نیو یارک میں بات کرتے ہوئے انتونیو گوتیرس نے کہا کہ اگر کسی ملک کو 2015 میں طے کیے جانے والے پیرس معاہدہ پر شکوک ہیں، دوسرے ممالک پر لازم ہے کہ وہ اس پر ڈٹے رہیں۔

* پیرس معاہدہ: ’امریکہ اپنے وعدوں سے پھر نہیں سکتا‘

* ٹرمپ کی پالیسیاں جو دنیا بدل سکتی ہیں

* پیرس کانفرنس میں عالمی ماحولیاتی معاہدہ طے پا گیا

پانچ ماہ قبل سیکریٹری جنرل کا عہدہ سنبھالنے والے انتونیو گوتیرس کا ماحولیاتی تبدیلی کے حوالے سے یہ پہلا اہم پیغام تھا۔

نیو یارک یونیورسٹی میں بات کرتے ہوئے انھوں نے کہا 'اگر کسی ملک کی حکومت کو لگتا ہے کہ دنیا کو اس معاہدے کی ضرورت نہیں ہے، تو دوسرے ملکوں پر لازم ہے کہ وہ متحد رہیں اور اپنے موقف پر ڈٹے رہیں۔'

انتونیو گوتیرس کے مطابق ان کا پیغام بہت سادہ ہے۔ 'یہ دنیا تباہی کے دہانے پر ہے اور یہ انتہائی ضروری ہے کہ تمام ملک پیرس معاہدے پر عمل کریں۔'

تصویر کے کاپی رائٹ Getty Images

خیال رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے سات امیر ترین ملکوں کی تنظیم جی سیون کے دوسرے رہنماؤں کے برعکس پیرس معاہدے کی حمایت کرنے سے انکار کر دیا ہے اور بہت جلد وہ اس معاملے پر امریکہ کا موقف طے کریں گے۔

اس سے پہلے بھی صدر ٹرمپ کہہ چکے ہیں کہ گلوبل وارمنگ ایک دھوکہ ہے جسے چین نے بنایا ہے اور انھوں نے پیرس معاہدے سے منحرف ہونے کی دھمکی بھی دی ہے۔

140 سے زائد ممالک، بشمول امریکہ، نے پیرس معاہدے کی تجدید کی ہے لیکن صدر ٹرمپ نے اپنی صدارتی مہم کے دوران اس کو تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ یہ امریکہ کی معیشت کے لیے نقصان دہ ہے۔

متعلقہ عنوانات

اسی بارے میں