پندرہ منٹ کی روزانہ ورزش ضروری

Image caption ایک بالغ شخص کے لیے اپنی صحت کے مفاد میں پندرہ منٹ کی ورزش کم ترین حد ہے

تائیوان میں ایک نئی تحقیق کے مطابق روزانہ صرف پندرہ منٹ کی ورزش سے نہ صرف عمر میں تین سال تک اضافہ ہو سکتا ہے بلکہ موت کے خطرے میں چودہ فیصد تک کمی ہو سکتی ہے۔

لینسیٹ میں ماہرین کا کہنا ہے کہ ایک بالغ شخص کے لیے اپنی صحت کے مفاد میں ورزش کی یہ کم ترین حد ہے۔

انگلینڈ کی ایک حالیہ تحقیق میں کم سے کم کسرت کا وقت تیس منٹ تجویز کیا گیا تھا۔

برٹش جرنل آف سپورٹس میڈیسن میں شائع ہونے والی ایک تحقیق میں کہا گیا تھا کہ چھ گھنٹے روزانہ آلو کے چپس کھاتے ہوئے صوفے پر بیٹھ کر ٹی وی دیکھنے سے عمر کے پانچ سال کم ہو سکتے ہیں۔

حال ہی میں برطانیہ کی حکومت نے بالغ افراد کو ایک ہفتے میں کم سے کم ایک سو پچاس منٹ کسرت کرنے کا مشورہ دیا ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ یہ مشورہ اب بھی قابل عمل ہے اور پندرہ منٹ ان افراد کے لیے بہت بہتر ہے جو اس سے بھی کم کی بالکل ورزش نہیں کرتے۔

لینسیٹ میں کی گئی تحقیق میں چار لاکھ افراد کو شامل کیا گیا تھا جنہوں نے پندرہ منٹ روزانہ کسرت کی تھی۔

تحقیق میں کہا گیا ہے کہ مزید پندرہ منٹ کی ورزش عمر کی حد اور موت کی وجوہات میں چار فیصد کمی کرسکتی ہے۔

انگلینڈ کی چیف میڈیکل افسر سیلی ڈیوس کا کہنا ہے ’ہمیں امید ہے کہ ان تحقیق سے لوگوں میں آگاہی پیدا ہوگی۔ ورزش کرنے کے کئی طریقے ہیں جن میں ایک خاص رفتار سے چلنا بھی شامل ہے یا اپنے باغ میں کام کرنا بھی معنی رکھتا ہے۔‘

ان کے بقول ’آپ کم ورزش سے بھی اچھا فائدہ اٹھا سکتے ہیں۔ زیادہ ہمیشہ بہتر ہے لیکن کم ورزش آغاز کے لیے تو بہرحال اچھی ہے۔‘

اسی بارے میں