’پہلے نوزائیدہ کی موت والدین کے لیے خطرہ‘

Image caption سوگوار ماں باپ کی اپنے بچے کی موت کے بعد آنے والی دہائی میں مرنے کے خدشات چار گنا بڑھ جاتے ہیں۔

ایک تحقیق کے مطابق وہ والدین جن کا پہلا بچہ اپنی پہلی سالگرہ سے پہلے ہی فوت ہوجاتا ہے ایسے والدین خود بھی جلد موت کا شکار ہو سکتے ہیں۔

یارک اور سٹرلنگ یونیورسٹیوں کے تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ سوگوار ماں باپ کی اپنے نوزائیدہ بچے کی موت کے بعد آنے والی دہائی میں مرنے کے خدشات چار گنا بڑھ جاتے ہیں۔

گزشتہ تحقیقوں سے پتہ چلتا ہے کہ خاوند اور بیوی میں سے کسی ایک کی موت بھی اکثر دوسرے ساتھی کا دل توڑ کر رکھ دیتی ہے جو اس کی جلد موت کا سبب بن سکتی ہے۔

تاہم اس سے قبل تحقیق میں بچے کی موت کے اثر کا جائزہ نہیں لیا گیا تھا۔

تازہ تحقیق ایک میگزین بی ایم جی سپورٹِو اینڈ پیلیاٹِو کیئر میں شائع ہوئی جس میں برطانوی والدین پر تحقیق کی گئی۔

تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ ان کی تحقیق شدید تشویش کا باعث ہے اور اس موضوع پر مزید تحقیق کی ضرورت ہے۔

اس تحقیق میں اس بات کا احاطہ نہیں کیا گیا ہے کہ بچہ کی موت کے بعد کتنے والدین کی اموات خودکشی یا پھر ذہنی تناؤ کے باعث ہوتی ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ سوگواری انتہائی اہم انداز میں اثر انداز ہوتی ہے مثال کے طور پر یہ جسم کے مدافعتی نظام کو متاثر کرتی ہے جس کے باعث کسی بھی بیماری کا خدشہ بڑھ جاتا ہے۔

ایک اور نظریہ یہ ہے کہ مردہ بچے کی پیدائش یا نوزائیدہ بچے کی موت ایسے والدین کے ہاں زیادہ ہوتی ہے جن کی صحت خراب ہوتی ہے۔

اسی بارے میں